1. السلام علیکم
    آئی ٹی استاد ڈاٹ کام وزٹ کرنے کا شکریہ۔ ہم آپکو خوش آمدید کہتے ہیں۔ فورم کے کسی بھی حصے کو استعمال میں لانے جیسے پوسٹنگ کرنے، کوئی تھریڈ دیکھنے یا لکھنے کسی بھی ممبر سے رابطہ کرنے کے لئے اور فورم کے دیگر آلات وغیرہ کا استعمال کرنے کے لئے آپکا رجسٹر ہونا ضروری ہے۔ رجسٹر ہونے کے لئے یہاں کلک کریں۔ رجسٹریشن حاصل کرنا بالکل آسان اور بالکل مفت ہے۔

Apni ruswai tere naam ka charcha dekhun

Discussion in 'Roman Urdu Poetry' started by نمرہ, Jul 7, 2014.

  1. نمرہ

    نمرہ Supper Moderator

    Apni ruswai tere naam ka charcha dekhun
    Ik zara sher kahun aur mein kya kya dekhun

    Neend a jaye to kya mahfilen barpa dekhun
    Aankh khul jaye to tanhai ka sehra dekhun

    Sham bhi ho gai dhundhla gai ankhen meri
    Bhulne wale mein kab tak tera rasta dekhun

    Sab ziden uski mein puri karu har bat sunu
    Ek bache ki tarah se usse hansta dekhun

    Mujh pe cha jaye wo barsat ki khushbu ki tarah
    Ang ang apna ussi rut mein mehakta dekhun

    Tu meri tarah se yakta hai magar mere habib
    Ji mein aata hai koi aur bhi tujh sa dekhun

    Mein ne jis lamhe ko puja hai usse bas ik bar
    Khwab ban kar teri ankhon mein utarta dekhun

    Tu mera kuch nahin lagta magar Ae jan-e-hayat
    Jane kyon tere liye dil ko dharakta dekhun
    (Parveen shakir shayari)​
     
  2. PakArt

    PakArt May Allah bless all Martyre of Pakistan Staff Member

  3. UmerAmer

    UmerAmer VIP Member

    Very Nice
    Keep it up
     
  4. ~Asad~

    ~Asad~ Moderator

    بہت عمدہ اپ کا بہت بہت شکریہ
     

Share This Page