1. السلام علیکم
    آئی ٹی استاد ڈاٹ کام وزٹ کرنے کا شکریہ۔ ہم آپکو خوش آمدید کہتے ہیں۔ فورم کے کسی بھی حصے کو استعمال میں لانے جیسے پوسٹنگ کرنے، کوئی تھریڈ دیکھنے یا لکھنے کسی بھی ممبر سے رابطہ کرنے کے لئے اور فورم کے دیگر آلات وغیرہ کا استعمال کرنے کے لئے آپکا رجسٹر ہونا ضروری ہے۔ رجسٹر ہونے کے لئے یہاں کلک کریں۔ رجسٹریشن حاصل کرنا بالکل آسان اور بالکل مفت ہے۔

Bargashta-e-yazdan Se Kuch Bhul Hui Hai.............

Discussion in 'Roman Urdu Poetry' started by mawais551, Jul 9, 2014.

  1. mawais551

    mawais551 Lover

    bargashta-e-yazdan se kuch bhul hui hai
    bhatke hue insan se kuch bhul hui hai

    ta hadd-e-nazar shole hi shole hain chaman mein
    phulon k nigehban se kuch bhul hui hai

    jis ahad mein lut jaye faqiron ki kamai
    us ahad ke sultan se kuch bhul hui hai

    hanste hain meri surat-e-maftun pe shagufe
    mere dil-e-nadan se kuch bhul hui hai

    huron ki talab aur mai-o-sagar se hai nafrat
    zahid tere irfan se kuch bhul hui hai
     
  2. Net KiNG

    Net KiNG VIP Member

    بہت خوبصورت شئیرنگ کی ہے
     
  3. Very nice sharing...keep it up
     
  4. ~Asad~

    ~Asad~ Management

    بہت عمدہ اپ کا بہت بہت شکریہ
     

Share This Page