1. السلام علیکم
    آئی ٹی استاد ڈاٹ کام وزٹ کرنے کا شکریہ۔ ہم آپکو خوش آمدید کہتے ہیں۔ فورم کے کسی بھی حصے کو استعمال میں لانے جیسے پوسٹنگ کرنے، کوئی تھریڈ دیکھنے یا لکھنے کسی بھی ممبر سے رابطہ کرنے کے لئے اور فورم کے دیگر آلات وغیرہ کا استعمال کرنے کے لئے آپکا رجسٹر ہونا ضروری ہے۔ رجسٹر ہونے کے لئے یہاں کلک کریں۔ رجسٹریشن حاصل کرنا بالکل آسان اور بالکل مفت ہے۔

منفی سوچ کے حامل افراد کیلئے بری خبر

Discussion in 'Health & Diet' started by نمرہ, Jul 16, 2014.

  1. نمرہ

    نمرہ Supper Moderator

    Hello guest, Thank you for Register or you log to see the links!


    منفی سوچ کے حامل افراد خبردار ہو جائیں اور دوسرے لوگوں کے بارے میں حسد اور جلن سے پرہیز کریں کیونکہ سائنس کی ایک نئی تحقیق کے مطابق ایسے افراد کو فالج کے حملوں کے دگنے خطرات کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے۔ امریکن ہارٹ ایسوسی ایشن کے ایک طبی جریدے ’ دی ریسرچ ان سٹروک‘ کے ایک تحقیقی مطالعے کے مطابق ذہنی دباﺅ اور پریشانی انسانوں میں فالج کے خطرات کو بہت زیادہ بڑھا دیتی ہے۔ اس حالیہ تحقیق میں ماہرین 45 سے 84 سال کی عمر کے 6,700 افراد کا مطالعاتی جائزہ لیا گیا اور ایک سوالنامے کے ذریعے ان افراد کی ذہنی کیفیت اور ان کے رویوں سے متعلق سوالات کے جوابات اکٹھے کئے گئے۔ اس سروے میں ایسے افراد پر دو سال تک نظر رکھی گئی، جو ذہنی دباو¿ کی کہنہ بیماری، ڈپریشن کی علامات، غصے اور دوسرے لوگوں کے خلاف نفرت کے احساسات میں مبتلا تھے۔ ماہرین نے اندازہ لگایا کہ ان افراد کے مقابلے میں ایسے افراد میں فالج کے خطرات کم پائے گئے جو ڈپریشن وغیرہ کا زیادہ شکار نہیں تھے۔ تحقیق کے مطابق اس میں شامل افراد نے شروعات میں اس بات کا اعتراف کیا کہ انہیں دل کا کوئی بھی عارضہ لاحق نہیں ہے تاہم 11 سالوں پر مشتمل اس تحقیق کے دوران 147 افراد پر فالج کی بیمار ی کا حملہ ہوا جبکہ دیگر 48 افراد کو ’ٹرانسیئنٹ ایشیمک اٹیک‘ TIAs کا سامنا ہوا۔ محققین نے اندازہ لگایا کہ جن افراد میں دوسروں کے خلاف کینے اور نفرت کے جذبات زیادہ تھے، ان میں دیگر افراد کے مقابلے میں فالج یا ’ٹرانسیئنٹ ایشیمک اٹیک‘ کے امکانات بھی دو گنا زیادہ تھے۔​
     
  2. UmerAmer

    UmerAmer VIP Member

    Very Nice
    Keep it up
     
  3. BOHAT KHOOB
    BOHAT HI UMDAH SHERING

    [​IMG]

     

Share This Page