1. السلام علیکم
    آئی ٹی استاد ڈاٹ کام وزٹ کرنے کا شکریہ۔ ہم آپکو خوش آمدید کہتے ہیں۔ فورم کے کسی بھی حصے کو استعمال میں لانے جیسے پوسٹنگ کرنے، کوئی تھریڈ دیکھنے یا لکھنے کسی بھی ممبر سے رابطہ کرنے کے لئے اور فورم کے دیگر آلات وغیرہ کا استعمال کرنے کے لئے آپکا رجسٹر ہونا ضروری ہے۔ رجسٹر ہونے کے لئے یہاں کلک کریں۔ رجسٹریشن حاصل کرنا بالکل آسان اور بالکل مفت ہے۔
  2. آئی ٹی استاد کے لیے ٹیم ممبرز کی ضرورت ہے خواہش مند ممبرز ایڈمن سے رابطہ کریں
    Dismiss Notice

دجال کون ہے اور یہ کب اور کس طرح ظاہر ہوگا

Discussion in 'History aur Waqiat' started by T@nHA.D!L, Jan 9, 2013.

Share This Page

  1. T@nHA.D!L
    Offline

    T@nHA.D!L Regular Member
    • 18/33

    دجال قوم یہود کا ایک مرد ہے جو اس وقت بحکم الٰہی دریائے طبرستان کے جزائر میں قید ہے۔ یہ آزاد ہو کر ایک پہاڑ پر آئے گا وہاں بیٹھ کر آواز لگائے گا۔ دوسری آواز پر وہ لوگ جنہیں بدبخت ہونا ہے اس کے پاس جمع ہو جائیں گے اور یہ ایک عظیم لشکر کے ساتھ ملک خدا میں فتور پیدا کرنے کو شام و عراق کے درمیان سے نکلے گا۔ اس کی ایک آنکھ اور ایک ابرو بالکل نہ ہوگی۔ اسی وجہ سے اسے مسیح کہتے ہیں۔ اس کے ساتھ یہود کی فوجیں ہوں گی۔ وہ ایک بڑے گدھے پر سوار ہوگا اور اس کی پیشانی پر لکھاہوگا ک ف ر (یعنی کافر) جس کو ہر مسلمان پڑھے گا اور کافر کو نظر نہ آئے گا، اس کا فتنہ بہت شدید ہوگا، چالیس دن رہے گا، پہلا دن ایک سال کا ہوگا، دوسرا ایک مہینہ کا ، تیسرا ایک ہفتہ کا اور باقی دن جیسے ہوتے ہیں۔ وہ بہت تیزی کے ساتھ ایک شہر سے دوسرے شہر میں پہنچے گا۔ جیسے بادل جسے ہوا اڑاتی ہو، وہ خدائی کا دعویٰ کرے گا۔ اس کے ساتھ ایک باغ اور ایک آگ ہوگی جن کا نام جنت و دوزخ رکھے گا۔ مگر وہ جودیکھنے میں جنت معلوم ہوگی، وہ حقیقتاً آگ ہوگی اور جو جہنم دکھائی دے گا وہ مقام راحت ہوگا جس اسے مانیںگے ان کے لیے بادل کو حکم دے گا، برسنے لگے گا ، زمین کو حکم دے گا کھیتی جم اٹھے گی جو نہ مانیں گے ان کے پاس سے چلا جائے گا، ان پر قحط ہو جائے گا۔ تہی دست رہ جائیں گے۔ ویرانے میںجائے گا تو وہاں کے دفینے شہد کی مکھیوں کی طرح اس کے پیچھے ہو لیںگے۔ اسی قسم کے بہت سے شعبدے دکھائے گا اور حقیقت میں یہ سب جادو کے کرشمے ہوں گے جن کو واقفیت سے کچھ تعلق نہیں اس لیے اس کے وہاں سے جاتے ہی لوگوں کے پاس کچھ نہ رہے گا۔ اس وقت میں مسلمانوں کی روٹی پانی کا کام ان کی تسبیح و تہلیل دے گی یعنی وہ ذکرِ خدا کریں گے اور بھوک پیاس ان سے رفع ہوگی۔ چالیس دن میں حرمین طیبین (مکہ معظمہ و مدینہ منورہ) کے سوا تمام روئے زمین کا گشت کرے گا۔ حرمین شریفین میں جب جانا چاہیے گا۔ فرشتے اس کا منہ پھیر دیں گے۔ جب وہ ساری دنیا میں پھر پھر اکر ملکِ شام کو جائے گا اس وقت حضرت عیسیٰ علیہ السلام نزول فرمائیں گے۔

    جب دجال کا فتنہ انتہا کو پہنچ چکے گا اور وہ ملعون تمام دنیا میں پھر کر ملک شام میں جائے گا جہاں تمام اہل عرب سمٹ کر پہلے ہی جمع ہو چکے ہوں گے، یہ خبیث ان سب کا محاصر ہ کر لے گا۔ ان میں بائیس ہزار مرد جنگی اور ایک لاکھ عورتیں ہوں گی، ناگاہ اسی حالت میں قلعہ بند مسلمانوں کو غیب سے آواز آئے گی کہ گھبراؤ نہیں فریاد درس آپہنچا۔ اس وقت حضرت عیسیٰ علیہ السلام آسمان سے دو فرشتوں کے پروں پر ہاتھ رکھے زرد رنگ کا جوڑا زیب تن کئے ہوئے نہایت نورانی شکل میں دمشق کی جامع مسجد کے شرقی منارہ پر دین محمد رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کے حاکم اور امام عادل و مجد دملت ہو کر نزول فرمائیں گے۔ صبح کا وقت ہو گا نماز فجر کے لیے اقامت ہو چکی ہو گی۔ حضرت امام مہدی جو اس جماعت میں موجود ہونگے۔ آپ سے امامت کی درخواست کریں گے۔ حضرت عیسیٰ علیہ السلام حضرت امام مہدی کی پشت پر ہاتھ رکھ کر کہیں گے آگے بڑھو، نماز پڑھاؤ کہ تکبیر تمہارے ہی لیے ہوئی تھی۔ رسو ل اللہ صلی اللہ علیہ وسلم فرماتے ہیں ã?â¢ã¢â??â¬ã¢â??â¢ã?â¢ã¢â??â¬ã¢â??â¢تمھارا حال کیسا ہو گا جب تم میں ابنِ مریم نزول کریں گے ۔ اور تمہارا امام تمھیں میں سے ہوگاã?â¢ã¢â??â¬ã?å?ã?â¢ã¢â??â¬ã?å?۔ یعنی اس وقت کی تمہاری خوشی اور تمہارا فخر بیان سے باہر ہے کہ روح اللہ باوصف نبوت و رسالت تم پر اتریں، تم میں رہیں ، تمہارے معین و یاروبنیں اور تمہارے امام کے پیچھے نماز پڑھیں۔

    غرض عیسیٰ علیہ السلام سلام پھیر کر دروازہ کھلوائیں گے، اسی طرف دجال ہوگا جس کے ساتھ ستر ہزار یہودی ہتھیار بند ہوں گے۔ لشکر اسلام اس لشکرِ دجال پر حملہ کرے گا۔ گھمسان کا معرکہ ہوگا۔ جب دجال کی نظر حضرت عیسیٰ علیہ السلام پر پڑے گی، پانی میں نمک کی طرح پگھلنا شروع ہوگا اور بھاگے گا۔ یہ تعاقب فرمائیں گے اور دجال لعین کو تلاش کرکے بیت المقدس کے قریب موضع ã?â¢ã¢â??â¬ã¢â??â¢ã?â¢ã¢â??â¬ã¢â??⢠ُلدã?â¢ã¢â??â¬ã?å?ã?â¢ã¢â??â¬ã?å? کے دروازے پر جالیں گے اور اس کی پشت میں نیزہ ماریں گے، وہ جہنم واصل ہوگا۔ آپ مسلمانوں کو اس کا خون اپنے نیزے پر دکھائیں گے دجال کا فتنہ فرد ہونے کے بعد حضرت عیسیٰ علیہ السلام اصلاحات میں مشغول ہوں گے، اسلام پر کافروں سے جہاد فرمائیں گے اور جزیہ کو موقوف کر دیں گے۔ یعنی کافر سے سوا اسلام کے کچھ قبول نہ فرمائیں گے۔ صلیب توڑیں گے اور خنزیر کو نیست و نابود کر دیں گے۔ تمام اہل کتاب جو قتل سے بچیں گے سب ان پرایمان لے آئیں گے۔ ان کے زمانہ میں اللہ عزوجل اسلام کے سوا سب دینوں اور مذہبوں کو فنا کر دے گا۔ تمام جہاں میں ایک دین اسلام ہوگا اور مذہب ، ایک مذہب اہلسنت، آپ کے زمانہ میں مال کی کثرت ہوگی اور برکت میں افراط ، اور ساری زمین عادل سے بھر جائے گی، یہاں تک کہ بھڑےئے کے پہلو میں بکری بیٹھے گی اور وہ آنکھ اٹھا کر نہ دیکھے گا اور بچے سانپ سے کھیلیں گے
     
  2. PRINCE SHAAN
    Offline

    PRINCE SHAAN Guest

    Very nice sharing...............
     
  3. Zulfiqar Ali
    Offline

    Zulfiqar Ali Guest

Share This Page