1. السلام علیکم
    آئی ٹی استاد ڈاٹ کام وزٹ کرنے کا شکریہ۔ ہم آپکو خوش آمدید کہتے ہیں۔ فورم کے کسی بھی حصے کو استعمال میں لانے جیسے پوسٹنگ کرنے، کوئی تھریڈ دیکھنے یا لکھنے کسی بھی ممبر سے رابطہ کرنے کے لئے اور فورم کے دیگر آلات وغیرہ کا استعمال کرنے کے لئے آپکا رجسٹر ہونا ضروری ہے۔ رجسٹر ہونے کے لئے یہاں کلک کریں۔ رجسٹریشن حاصل کرنا بالکل آسان اور بالکل مفت ہے۔
  2. آئی ٹی استاد کے لیے ٹیم ممبرز کی ضرورت ہے خواہش مند ممبرز ایڈمن سے رابطہ کریں
    Dismiss Notice
  3. Dismiss Notice

فرضی نام


آئی ٹی استاد کی ںئی ایپ ڈاونلوڈ کریں اور آئی ٹی استاد ٹیلی نار اور ذونگ نیٹ ورک پر فری استمال کریں

itustad

Discussion in 'Quran e Kareem' started by نمرہ, Sep 24, 2014.

Quran e Kareem"/>Sep 24, 2014"/>

Share This Page

  1. نمرہ
    Offline

    نمرہ Regular Member
    • 38/49


    فرضی نام

    قرآن میں ایک سے زیاده مقامات پر یہ بات کہی گئ ہے کہ پیغمبروں نے جب اپنی قوموں کے سامنے توحید خالص کی دعوت پیش کی اور ان کے مزعومہ شریکوں کا انکار کیا تو لوگوں نے سخت رد عمل کا اظہار کیا - انهوں نے کہا کہ کیا تم چاہتے هو کہ هم صرف ایک اللہ کے عبادت گزار بنیں اور ان کو چهوڑ دیں جن کی عبادت ہمارے باپ دادا کرتے رہے ہیں - پیغمبر نے جواب دیا کہ کیا تم لوگ مجهہ سے ان ناموں پر جهگڑتے هو جو تم نے اور تمہارے باپ دادا نے رکهہ لئے ہیں ، جن کی کوئی سند خدا نے نہیں اتاری (الاعراف 71)

    نام رکهنے کا مطلب یہ ہے کہ ایک عاجز چیز کو طاقت ور چیز کہنا - ایک پهتر کی مورت کو ایسے نام سے پکارنے لگنا جو اس کے لیے سزاوار نہیں - مثلا قدیم عرب میں قبیلہ قریش کا ایک بت تها جس کو وه پوجتے تهے- اصل حقیقت کے اعتبار سے وه صرف ایک بے جان پتهر تها - مگر قریش نے اس کا نام عزی رکهہ دیا تها - عزی کا لفظ اعز کا مونث ہے یعنی بہت معزز ، بہت طاقتور -

    قدیم زمانہ میں اس طرح کے بے اصل نام زیاده تر بتوں کے هوا کرتے تهے - موجوده زمانہ میں پریس کے رواج نے اسی نوعیت کی ایک اور برائی کو بہت بڑے پیمانہ پر پیدا کیا ہے - اس نئ برائی کو اکابر پرستی کہا جا سکتا ہے - موجوده زمانہ میں ہر قوم اپنی محبوب شخصیتوں کو بڑے بڑے لقب دیتی ہے - اس لقب کو پریس اور میڈیا کے ذریعہ مشہور کر کے لوگوں کے دماغوں میں اس طرح بٹها دیا جاتا ہے کہ وه کہنے لگتے ہیں کہ یہ شخصیتیں واقعتہ ویسی ہی ہیں جیسا کہ ان کے لقب میں انهیں بتایا گیا ہے -

    قطب الاقطاب ، غوث الاعظم ، قائد اکبر ، حکیم مشرق ، حضرت اقدس ، مجاہد اسلام ، علامہ زماں ، شہید اعظم ، مجتہد العصر ، امام حریت ، وغیره ، سب اسی قسم کے نام ہیں جو لوگوں نے بطور خود رکهہ لیے ہیں - انهیں مفروضہ القاب کا یہ نتیجہ ہے کہ ان شخصیتوں پر کوئی تنقید کی جائے تو لوگ فورا بگڑ جاتے ہیں - وه سمجهتے ہیں کہ فلاں شخص تو " حضرت اقدس " ہے ، اس پر کیسے تنقید کی جا سکتی ہے ، حالانکہ حضرت اقدس کچهہ لوگوں کا اپنا گهڑا هوا نام ہے نہ کہ خدا کی طرف سے آیا هوا لقب -​
     
  2. UmerAmer
    Offline

    UmerAmer Regular Member
    • 38/49

    JazakAllah
     
  3. PRINCE SHAAN
    Online

    PRINCE SHAAN Guest

    Jazak Allah Khair
     
  4. Asad khan786
    Offline

    Asad khan786 Newbi
    • 16/16

    Umda bot achy zabardast
     

Share This Page