1. السلام علیکم
    آئی ٹی استاد ڈاٹ کام وزٹ کرنے کا شکریہ۔ ہم آپکو خوش آمدید کہتے ہیں۔ فورم کے کسی بھی حصے کو استعمال میں لانے جیسے پوسٹنگ کرنے، کوئی تھریڈ دیکھنے یا لکھنے کسی بھی ممبر سے رابطہ کرنے کے لئے اور فورم کے دیگر آلات وغیرہ کا استعمال کرنے کے لئے آپکا رجسٹر ہونا ضروری ہے۔ رجسٹر ہونے کے لئے یہاں کلک کریں۔ رجسٹریشن حاصل کرنا بالکل آسان اور بالکل مفت ہے۔

کیا حال سُناواں دِل دا

Discussion in 'Punjabi' started by PRINCE SHAAN, Dec 28, 2014.

  1. [​IMG]

    کیا حال سُناواں دِل دا

    کیا حال سُناواں دِل دا
    کوئی محرم راز نہ مِل دا
    دلِ زار کا حال کیا سناؤں کہ کوئی محرم راز ہی نہیں ملتا۔

    مونہہ دُھوڑ مٹی سر پایم
    سارا ننگ نموج ونجایم
    کوئی پُچھن نہ ویہڑے آیم
    ہتھوں اُلٹا عالم کِھل دا

    ننگ نموج - عزت و شرم، ونجایم - گم کرنا، ہتھوں - بلکہ، کھل دا - ہنستا ہے
    اس عشق نے میرے چہرے اور سر میں مٹی ڈال دی ہے
    اور ساری عزت و شرم و وقار برباد ہو گیا ہے،
    اور کوئی بھی میرا یہ حال دیکھنے میرے گھر نہیں آیا
    بلکہ الٹا لوگ ٹھٹھا اور مذاق کرتے ہیں۔

    آیا بھار برہوں سِر باری
    لگی ہو ہو شہر خواری
    روندے عمر گذاریم ساری
    ناں پایم ڈس منزل دا
    برہوں - ہجر، ڈس - سراغ

    میرے سر پر ہجر کا بھاری بوجھ آن پڑا ہے،
    اور شہر شہر رسوائی اور خواری ہو رہی ہے،
    اور اسی حالت میں ساری عمر روتے روتے گزر گئی ہے
    لیکن پھر بھی منزل کا کوئی سراغ نہیں ملا۔

    دل یار کِتے کُرلاوے
    تڑپاوے تے غم کھاوے
    دُکھ پاوے سُول نبھاوے
    ایہو طَور تینڈے بیدل دا

    میرا دل یار کی جدائی میں روتا ہے، تڑپتا ہے اور غم کھاتا ہے
    ، دکھ سہتا ہے اور درد برداشت کرتا ہے، تیرے عاشق کی یہی حالت ہے۔
    کیا حال سناواں دل دا

    کافی خواجہ غلام فرید

     
  2. UmerAmer

    UmerAmer VIP Member

    Bohat Khoob
     

Share This Page