1. السلام علیکم
    آئی ٹی استاد ڈاٹ کام وزٹ کرنے کا شکریہ۔ ہم آپکو خوش آمدید کہتے ہیں۔ فورم کے کسی بھی حصے کو استعمال میں لانے جیسے پوسٹنگ کرنے، کوئی تھریڈ دیکھنے یا لکھنے کسی بھی ممبر سے رابطہ کرنے کے لئے اور فورم کے دیگر آلات وغیرہ کا استعمال کرنے کے لئے آپکا رجسٹر ہونا ضروری ہے۔ رجسٹر ہونے کے لئے یہاں کلک کریں۔ رجسٹریشن حاصل کرنا بالکل آسان اور بالکل مفت ہے۔
  2. آئی ٹی استاد کے لیے ٹیم ممبرز کی ضرورت ہے خواہش مند ممبرز ایڈمن سے رابطہ کریں
    Dismiss Notice

Yeh Dil ka Chor keh Iski Zaroortain Thi Bohat

Discussion in 'Roman Urdu Poetry' started by IQBAL HASSAN, May 5, 2015.

Share This Page

  1. IQBAL HASSAN
    Offline

    IQBAL HASSAN Designer
    • 83/98

    View attachment 521
    Yeh Dil ka Chor keh Iski Zaroortain Thi Bohat
    Wagarna Tark-e-Talluk Ki Soortain Thi Bohat
    View attachment 521

    Milay To Toot k Roye nah Khul k Baatain ki
    Kah Jaisay Ab k Diloun main Kadourtain thi Bohat

    View attachment 521
    Bhula Diye hain Tere Gham nay Dukh Zamanay K
    Khuda nahi tha to pathar ki mortain thin Bohat

    View attachment 521
    Dareedah Pairhanoun ka khyaal kya aata
    Ameer-e-Shehar ki apni Zaroortain thi Bohat
    View attachment 521
    Faraz Dil ko Nigahoun say Ikhtilaf Raha
    Wagarna Shehar Main Ham Shakal Soortain Thin Bohat
    View attachment 521
     
  2. PRINCE SHAAN
    Online

    PRINCE SHAAN Guest

  3. Rania
    Offline

    Rania VIP Member
    • 18/33

    بہت ھی عمدہ شیرینگ ھے
     

Share This Page