1. السلام علیکم
    آئی ٹی استاد ڈاٹ کام وزٹ کرنے کا شکریہ۔ ہم آپکو خوش آمدید کہتے ہیں۔ فورم کے کسی بھی حصے کو استعمال میں لانے جیسے پوسٹنگ کرنے، کوئی تھریڈ دیکھنے یا لکھنے کسی بھی ممبر سے رابطہ کرنے کے لئے اور فورم کے دیگر آلات وغیرہ کا استعمال کرنے کے لئے آپکا رجسٹر ہونا ضروری ہے۔ رجسٹر ہونے کے لئے یہاں کلک کریں۔ رجسٹریشن حاصل کرنا بالکل آسان اور بالکل مفت ہے۔

"Perveen Shakir"

Discussion in 'Roman Urdu Poetry' started by *Ameer*, Sep 2, 2015.

  1. *Ameer*

    *Ameer* Senior Member

    '"parveen shakir"
    Sari duniya k riwajon sy adawat ki thi

    Tum ko yad hai jab men ny ik himaqat ki thi

    Usy razdan samajh kr bataya tha hal-e-dil apna

    Par us shakhs ny meri zat sy baghawat ki thi

    Jab kisi ki yadon ny Aankhon ko bhigoya tha meri

    Maine ik nam ki tasbeh pe tilawat ki thi

    Us ko chor k hansty hue ghar Aa kar

    Itna roye thy k Ankhon ny qyamat ki thi

    Mery ujarny ka sabab jab bhi kisi ny pocha to

    Maine bas itna bataya k "MOHABBAT KI THI".'
     
  2. IT.Expert

    IT.Expert Well Wishir

    عمدہ انتخاب۔
    بہت خوب۔۔۔​
     
  3. UmerAmer

    UmerAmer VIP Member

    بہت اچھی پوئٹری شئیر کی ہے
    شئیر کرنے کے لئے شکریہ​
     
  4. *Ameer*

    *Ameer* Senior Member

    Thanks dear
     

Share This Page