1. السلام علیکم
    آئی ٹی استاد ڈاٹ کام وزٹ کرنے کا شکریہ۔ ہم آپکو خوش آمدید کہتے ہیں۔ فورم کے کسی بھی حصے کو استعمال میں لانے جیسے پوسٹنگ کرنے، کوئی تھریڈ دیکھنے یا لکھنے کسی بھی ممبر سے رابطہ کرنے کے لئے اور فورم کے دیگر آلات وغیرہ کا استعمال کرنے کے لئے آپکا رجسٹر ہونا ضروری ہے۔ رجسٹر ہونے کے لئے یہاں کلک کریں۔ رجسٹریشن حاصل کرنا بالکل آسان اور بالکل مفت ہے۔

دہر میں حرفِ محبت عام ہونا چاہئے

Discussion in 'Poetry' started by *Shan Jee*, Oct 27, 2015.

  1. *Shan Jee*

    *Shan Jee* Designer

    دہر میں حرفِ محبت عام ہونا چاہئے
    زندگی شائستۂ اسلام ہونا چاہئے

    آدمی کو خوگر آلام ہونا چاہئے
    ہر سحر میں کچھ تو رنگ شام ہونا چاہئے

    ہر تقاضہ عشق کا بے اصل ہے ،بے اصل ہے
    درد کو اپنا ہی خود انعام ہونا چاہئے

    مٹ ہی جائے گا کسی دن یہ دلِ درد آشنا
    اِس فسانہ کا یہی انجام ہونا چاہئے

    شکوۂ دنیا کہاں تک اِس سے کچھ حاصل نہیں
    تم کو اپنے کام سے بس کام ہونا چاہئے

    منزلِ دل میں بھلا کیا کام عقل و ہوش کا
    منزلِ دل میں جنوں سے کام ہونا چاہئے

    شعر میں کھل جائیں گے راز و نیازِآگہی
    دل کو لیکن مائلِ الہام ہونا چاہئے

    لوگ کہتے ہیں تمہیں دیوانہ اے سرورتو کیا
    کچھ تو دنیا میں تمہارا نام ہونا چاہئے
     

Share This Page