1. السلام علیکم
    آئی ٹی استاد ڈاٹ کام وزٹ کرنے کا شکریہ۔ ہم آپکو خوش آمدید کہتے ہیں۔ فورم کے کسی بھی حصے کو استعمال میں لانے جیسے پوسٹنگ کرنے، کوئی تھریڈ دیکھنے یا لکھنے کسی بھی ممبر سے رابطہ کرنے کے لئے اور فورم کے دیگر آلات وغیرہ کا استعمال کرنے کے لئے آپکا رجسٹر ہونا ضروری ہے۔ رجسٹر ہونے کے لئے یہاں کلک کریں۔ رجسٹریشن حاصل کرنا بالکل آسان اور بالکل مفت ہے۔

قیدِ تنہائی

Discussion in 'Poetry' started by *Shan Jee*, Oct 27, 2015.

  1. *Shan Jee*

    *Shan Jee* Designer

    قیدِ تنہائی


    دُور آفاق پہ لہرائی کوئی نُور کی لہر​
    خواب ہی خواب میں بیدار ہُوا درد کا شہر​
    خواب ہی خواب میں بیتاب نظر ہونے لگی​
    عدم آبادِ جُدائی میں سحر ہونے لگی​
    کاسۂ دل میں بھری اپنی صبُوحی میں نے​
    گھول کر تلخی دیروز میں اِمروز کا زہر​
    دُور آفاق پہ لہرائی کوئی نُور کی لہر​
    آنکھ سے دُور کسی صبح کی تمہید لیے​
    کوئی نغمہ ، کوئی خوشبو ، کوئی کافر صورت​
    بے خبر گزری ، پریشانیِ اُمیّد لیے​
    گھول کر تلخیِ دیروز میں اِمروز کا زہر​
    حسرتِ روزِ ملاقات رقم کی میں نے​
    دیس پردیس کے یارانِ قدح خوار کے نام​
    حُسنِ آفاق ، جمالِ لب و رخسار کے نام​
     
  2. PakArt

    PakArt May Allah bless all Martyre of Pakistan

    :salam1:‎
    [​IMG]
    [​IMG]
    [​IMG]
    [​IMG]
    ‎ماشا اللہ بہت عمدہ اشتراک کیا ہے۔ ‏آپکی اور عمدہ تھریڈ کا انتطار رہے گا۔شکریہ‎
     

Share This Page