1. السلام علیکم
    آئی ٹی استاد ڈاٹ کام وزٹ کرنے کا شکریہ۔ ہم آپکو خوش آمدید کہتے ہیں۔ فورم کے کسی بھی حصے کو استعمال میں لانے جیسے پوسٹنگ کرنے، کوئی تھریڈ دیکھنے یا لکھنے کسی بھی ممبر سے رابطہ کرنے کے لئے اور فورم کے دیگر آلات وغیرہ کا استعمال کرنے کے لئے آپکا رجسٹر ہونا ضروری ہے۔ رجسٹر ہونے کے لئے یہاں کلک کریں۔ رجسٹریشن حاصل کرنا بالکل آسان اور بالکل مفت ہے۔

کب ٹھہرے گا درد اے دل ، کب رات بسر ہوگی​

Discussion in 'Poetry' started by *Shan Jee*, Oct 27, 2015.

  1. *Shan Jee*

    *Shan Jee* Designer

    کب ٹھہرے گا درد اے دل ، کب رات بسر ہوگی​
    سنتے تھے وہ آئیں گے ، سنتے تھے سحر ہوگی​
    کب جان لہو ہوگی ، کب اشک گہر ہوگا​
    کس دن تری شنوائی اے دیدۂ تر ہوگی​
    کب مہکے گی فصلِ گل ، کب بہکے گا میخانہ​
    کب صبحِ سخن ہوگی ، کب شامِ نظر ہوگی​
    واعظ ہے نہ زاہد ہے ، ناصح ہے نہ قاتل ہے​
    اب شہر میں یاروں کی کس طرح بسر ہوگی​
    کب تک ابھی رہ دیکھیں اے قامتِ جانانہ​
    کب حشر معیّن ہے تجھ کو تو خبر ہوگی​
     
  2. Akram Naaz

    Akram Naaz BuL..BuL Staff Member

    Great Sharing,
     

Share This Page