1. السلام علیکم
    آئی ٹی استاد ڈاٹ کام وزٹ کرنے کا شکریہ۔ ہم آپکو خوش آمدید کہتے ہیں۔ فورم کے کسی بھی حصے کو استعمال میں لانے جیسے پوسٹنگ کرنے، کوئی تھریڈ دیکھنے یا لکھنے کسی بھی ممبر سے رابطہ کرنے کے لئے اور فورم کے دیگر آلات وغیرہ کا استعمال کرنے کے لئے آپکا رجسٹر ہونا ضروری ہے۔ رجسٹر ہونے کے لئے یہاں کلک کریں۔ رجسٹریشن حاصل کرنا بالکل آسان اور بالکل مفت ہے۔
  2. آئی ٹی استاد کے لیے ٹیم ممبرز کی ضرورت ہے خواہش مند ممبرز ایڈمن سے رابطہ کریں
    Dismiss Notice

غلاموں پر طعام اور لباس کے معاملے میں احسا&#16

Discussion in 'Hadess Mubarak' started by Akram Naaz, Dec 21, 2015.

Share This Page

  1. Akram Naaz
    Offline

    Akram Naaz BuL..BuL Staff Member
    • 63/65

    ﻣﺨﺘﺼﺮ ﺻﺤﯿﺢ ﻣﺴﻠﻢ
    ﻏﻼﻣﻮﮞ ﮐﻮ ﺁﺯﺍﺩ ﮐﺮﻧﮯ ﮐﮯ ﻣﺴﺎﺋﻞ
    ﺑﺎﺏ : ﻏﻼﻣﻮﮞ ﭘﺮ ﻃﻌﺎﻡ ﺍﻭﺭ ﻟﺒﺎﺱ ﮐﮯ ﻣﻌﺎﻣﻠﮧ
    ﻣﯿﮟ ﺍﺣﺴﺎﻥ ﮐﺮﻧﺎ ﺍﻭﺭ ﺍﻥ ﮐﻮ ﺍﻥ ﮐﯽ ﻃﺎﻗﺖ
    ﺳﮯ ﺑﮍﮪ ﮐﺮ ﺗﮑﻠﯿﻒ ﻧﮧ ﺩﯾﻨﺎ۔
    904 : ﻣﻌﺮﻭﺭ ﺑﻦ ﺳﻮﯾﺪ ﮐﮩﺘﮯ ﮨﯿﮟ ﮐﮧ ﮨﻢ ﺳﯿﺪﻧﺎ
    ﺍﺑﻮﺫﺭ ﻏﻔﺎﺭﯼ ﺭﺿﯽ ﺍﻟﻠﮧ ﻋﻨﮧ ﮐﮯ ﭘﺎﺱ ‏( ﻣﻘﺎﻡ ‏)
    ﺭﺑﺬﮦ ﻣﯿﮟ ﮔﺌﮯ ﻭﮦ ﺍﯾﮏ ﭼﺎﺩﺭ ﺍﻭﮌﮬﮯ ﮨﻮﺋﮯ ﺗﮭﮯ
    ﺍﻭﺭ ﺍﻥ ﮐﺎ ﻏﻼﻡ ﺑﮭﯽ ﻭﯾﺴﯽ ﮨﯽ ﭼﺎﺩﺭ ﭘﮩﻨﮯ
    ﮨﻮﺋﮯ ﺗﮭﺎ، ﺗﻮ ﮨﻢ ﻧﮯ ﮐﮩﺎ ﮐﮧ ﺍﮮ ﺍﺑﻮﺫﺭّ ! ﺍﮔﺮ ﺗﻢ
    ﯾﮧ ﺩﻭﻧﻮﮞ ﭼﺎﺩﺭﯾﮟ ﻟﮯ ﻟﯿﺘﮯ ﺗﻮ ﺍﯾﮏ ﺟﺒﮧ ﮨﻮ
    ﺟﺎﺗﺎ۔ ﺍﻧﮩﻮﮞ ﻧﮯ ﮐﮩﺎ ﮐﮧ ﻣﺠﮫ ﻣﯿﮟ ﺍﻭﺭ ﻣﯿﺮﮮ
    ﺍﯾﮏ ﺑﮭﺎﺋﯽ ﻣﯿﮟ ﻟﮍﺍﺋﯽ ﮨﻮﺋﯽ، ﺍﺱ ﮐﯽ ﻣﺎﮞ
    ﻋﺠﻤﯽ ﺗﮭﯽ ﺗﻮ ﻣﯿﮟ ﻧﮯ ﺍﺱ ﮐﻮ ﻣﺎﮞ ﮐﯽ ﮔﺎﻟﯽ
    ﺩﯼ۔ ﺍﺱ ﻧﮯ ﺭﺳﻮﻝ ﺍﻟﻠﮧ ﺻﻠﯽ ﺍﻟﻠﮧ ﻋﻠﯿﮧ ﻭﺳﻠﻢ
    ﺳﮯ ﻣﯿﺮﯼ ﺷﮑﺎﯾﺖ ﮐﺮ ﺩﯼ۔ ﺟﺐ ﻣﯿﮟ ﺁﭖ ﺻﻠﯽ
    ﺍﻟﻠﮧ ﻋﻠﯿﮧ ﻭﺳﻠﻢ ﺳﮯ ﻣﻼ ﺗﻮ ﺁﭖ ﺻﻠﯽ ﺍﻟﻠﮧ ﻋﻠﯿﮧ
    ﻭﺳﻠﻢ ﻧﮯ ﻓﺮﻣﺎﯾﺎ ﮐﮧ ﺍﮮ ﺍﺑﻮﺫﺭّ ! ﺗﺠﮫ ﻣﯿﮟ
    ﺟﺎﮨﻠﯿﺖ ﮨﮯ ‏( ﯾﻌﻨﯽ ﺟﺎﮨﻠﯿﺖ ﮐﮯ ﺯﻣﺎﻧﮯ ﮐﺎ ﺍﺛﺮ
    ﺑﺎﻗﯽ ﮨﮯ ﺟﺲ ﺯﻣﺎﻧﮯ ﻣﯿﮟ ﻟﻮﮒ ﺍﭘﻨﮯ ﻣﺎﮞ ﺑﺎﭖ
    ﺳﮯ ﻓﺨﺮ ﮐﺮﺗﮯ ﺗﮭﮯ ﺍﻭﺭ ﺩﻭﺳﺮﮮ ﮐﮯ ﻣﺎﮞ ﺑﺎﭖ
    ﮐﻮ ﺣﻘﯿﺮ ﺳﻤﺠﮭﺘﮯ ﺗﮭﮯ ‏) ۔ ﻣﯿﮟ ﻧﮯ ﮐﮩﺎ ﯾﺎ
    ﺭﺳﻮﻝ ﺍﻟﻠﮧ ﺻﻠﯽ ﺍﻟﻠﮧ ﻋﻠﯿﮧ ﻭﺳﻠﻢ ! ﺟﻮ ﮐﻮﺋﯽ
    ﻟﻮﮔﻮﮞ ﮐﻮ ﮔﺎﻟﯽ ﺩﮮ ﮔﺎ ﺗﻮ ﻟﻮﮒ ﺍﺱ ﮐﮯ ﻣﺎﮞ
    ﺑﺎﭖ ﮐﻮ ﮔﺎﻟﯽ ﺩﯾﮟ ﮔﮯ۔ ﺁﭖ ﺻﻠﯽ ﺍﻟﻠﮧ ﻋﻠﯿﮧ
    ﻭﺳﻠﻢ ﻧﮯ ﻓﺮﻣﺎﯾﺎ ﮐﮧ ﺍﮮ ﺍﺑﻮﺫﺭّ ! ﺗﺠﮫ ﻣﯿﮟ
    ﺟﺎﮨﻠﯿﺖ ﮨﮯ ‏( ﯾﻌﻨﯽ ﺍﮔﺮ ﺍﺱ ﻧﮯ ﺗﺠﮭﮯ ﺑﺮﺍ ﮐﮩﺎ
    ﺗﮭﺎ ﺗﻮ ﺍﺱ ﮐﺎ ﺑﺪﻟﮧ ﯾﮧ ﺗﮭﺎ ﮐﮧ ﺗﻮ ﺑﮭﯽ ﺍﺱ ﮐﻮ
    ﺑﺮﺍ ﮐﮩﮯ ﻧﮧ ﮐﮧ ﺍﺱ ﮐﮯ ﻣﺎﮞ ﺑﺎﭖ ﮐﻮ ‏) ﻭﮦ
    ﺗﻤﮩﺎﺭﮮ ﺑﮭﺎﺋﯽ ﮨﯿﮟ ‏( ﺍﺱ ﺳﮯ ﻣﻌﻠﻮﻡ ﮨﻮﺍ ﮐﮧ
    ﻭﮦ ﻏﻼﻡ ﺗﮭﺎ ﻣﮕﺮ ﺳﯿﺪﻧﺎ ﺍﺑﻮﺫﺭّ ﺭﺿﯽ ﺍﻟﻠﮧ ﻋﻨﮧ
    ﻧﮯ ﺍﺱ ﮐﻮ ﺑﮭﺎﺋﯽ ﮐﮩﺎ ﮐﯿﻮﻧﮑﮧ ﺭﺳﻮﻝ ﺍﻟﻠﮧ ﺻﻠﯽ
    ﺍﻟﻠﮧ ﻋﻠﯿﮧ ﻭﺳﻠﻢ ﻧﮯ ﺑﮭﯽ ﺍﻥ ﮐﻮ ﺑﮭﺎﺋﯽ ﮐﮩﺎ ‏) ﺍﻟﻠﮧ
    ﺗﻌﺎﻟﯽٰ ﻧﮯ ﺍﻥ ﮐﻮ ﺗﻤﮩﺎﺭﮮ ﻣﺎﺗﺤﺖ ﮐﺮ ﺩﯾﺎ ﮨﮯ
    ‏( ﯾﻌﻨﯽ ﺗﻤﮩﺎﺭﯼ ﻣﻠﮏ ﻣﯿﮟ ‏) ﺗﻢ ﺍﻥ ﮐﻮ ﻭﮨﯽ
    ﮐﮭﻼﺅ ﺟﻮ ﺗﻢ ﺧﻮﺩ ﮐﮭﺎﺗﮯ ﮨﻮ ﺍﻭﺭ ﻭﮨﯽ ﭘﮩﻨﺎﺅ
    ﺟﻮ ﺗﻢ ﺧﻮﺩ ﭘﮩﻨﺘﮯ ﮨﻮ ﺍﻭﺭ ﺍﻥ ﮐﻮ ﺍﻥ ﮐﯽ ﺳﮑﺖ
    ﺳﮯ ﺯﯾﺎﺩﮦ ﺗﮑﻠﯿﻒ ﻣﺖ ﺩﻭ ﺍﮔﺮ ﺍﯾﺴﺎ ﮐﺎﻡ ﻟﻮ ﺗﻮ
    ﺗﻢ ﺍﻥ ﮐﯽ ﻣﺪﺩ ﮐﺮﻭ۔
     
  2. Ahsaaan
    Offline

    Ahsaaan Senior Member
    • 48/49

  3. Mehtab Ali
    Offline

    Mehtab Ali Super Moderators
    • 16/16

Share This Page