1. السلام علیکم
    آئی ٹی استاد ڈاٹ کام وزٹ کرنے کا شکریہ۔ ہم آپکو خوش آمدید کہتے ہیں۔ فورم کے کسی بھی حصے کو استعمال میں لانے جیسے پوسٹنگ کرنے، کوئی تھریڈ دیکھنے یا لکھنے کسی بھی ممبر سے رابطہ کرنے کے لئے اور فورم کے دیگر آلات وغیرہ کا استعمال کرنے کے لئے آپکا رجسٹر ہونا ضروری ہے۔ رجسٹر ہونے کے لئے یہاں کلک کریں۔ رجسٹریشن حاصل کرنا بالکل آسان اور بالکل مفت ہے۔

خون اپنا ھو یا پرایا

Discussion in 'Poetry' started by Akram Naaz, Dec 25, 2015.

  1. Akram Naaz

    Akram Naaz BuL..BuL Staff Member

    ﺧﻮﻥ ﺍﭘﻨﺎ ﮬﻮ ﯾﺎ ﭘﺮﺍﯾﺎ ﮬﻮ
    ﻧﺴﻞ. ﺁﺩﻡ ﮐﺎ ﺧﻮﻥ ﮬﮯ ﺁﺧﺮ
    ﺟﻨﮓ ﻣﺸﺮﻕ ﻣﯿﮟ ﮬﻮ ﮐﮧ ﻣﻐﺮﺏ ﻣﯿﮟ
    ﺍﻣﻦ ﻋﺎﻟﻢ ﮐﺎ ﺧﻮﻥ ﮬﮯ ﺁﺧﺮ
    ﺑﻢ ﮔﮭﺮﻭﮞ ﭘﺮ ﮔﺮﯾﮟ ﮐﮧ ﺳﺮﺣﺪ ﭘﺮ
    ﺭﻭﺡِ ﺗﻌﻤﯿﺮ ﺯﺧﻢ ﮐﮭﺎﺗﯽ ﮬﮯ
    ﮐﮭﯿﺖ ﺍﭘﻨﮯ ﺟﻠﯿﮟ ﮐﮧ ﺍﻭﺭﻭﮞ ﮐﮯ
    ﺯﯾﺴﺖ ﻓﺎﻗﻮﮞ ﺳﮯ ﺗﻠﻤﻼﺗﯽ ﮬﮯ
    ﭨﯿﻨﮏ ﺁﮔﮯ ﺑﮍﮬﯿﮟ ﮐﮧ ﭘﯿﭽﮭﮯ ﮨﭩﯿﮟ
    ﮐﻮﮐﮫ ﺩﮬﺮﺗﯽ ﮐﯽ ﺑﺎﻧﺠﮫ ﮨﻮﺗﯽ ﮬﮯ
    ﻓﺘﺢ ﮐﺎ ﺟﺸﻦ ﮬﻮ ﮐﮧ ﮬﺎﺭ ﮐﺎ ﺳﻮﮒ
    ﺯﻧﺪﮔﯽ ﻣﯿﺘﻮﮞ ﭘﮧ ﺭﻭﺗﯽ ﮬﮯ
    ﺟﻨﮓ ﺗﻮ ﺧﻮﺩ ﮬﯽ ﺍﯾﮏ ﻣﺴﺌﻠﮧ ﮬﮯ
    ﺟﻨﮓ ﻣﺴﺌﻠﻮﮞ ﮐﺎ ﺣﻞ ﮐﯿﺎ ﺩﮮ ﮔﯽ؟
    ﺁﮒ ﺍﻭﺭ ﺧﻮﻥ ﺁﺝ ﺑﺨﺸﮯ ﮔﯽ
    ﺑﮭﻮﮎ ﺍﻭﺭ ﺍﺣﺘﺠﺎﺝ ﮐﻞ ﺩﮮ ﮔﯽ
    ﺑﺮﺗﺮﯼ ﮐﮯ ﺛﺒﻮﺕ ﮐﯽ ﺧﺎﻃﺮ
    ﺧﻮﮞ ﺑﮩﺎﻧﺎ ﮬﯽ ﮐﯿﺎ ﺿﺮﻭﺭﯼ ﮬﮯ؟
    ﮔﮭﺮ ﮐﯽ ﺗﺎﺭﯾﮑﯿﺎﮞ ﻣﭩﺎﻧﮯ ﮐﻮ
    ﮔﮭﺮ ﺟﻼﻧﺎ ﮬﯽ ﮐﯿﺎ ﺿﺮﻭﺭﯼ ﮬﮯ؟
    ﺟﻨﮓ ﮐﮯ ﺍﻭﺭ ﺑﮭﯽ ﺗﻮ ﻣﯿﺪﺍﮞ ﮬﯿﮟ
    ﺻﺮﻑ ﻣﯿﺪﺍﻥ ﮐﺸﺖ ﻭ ﺧﻮﮞ ﮬﯽ ﻧﮩﯿﮟ
    ﺣﺎﺻﻞ ﺯﻧﺪﮔﯽ ﺧﺮﺩ ﺑﮭﯽ ﮬﮯ
    ﺣﺎﺻﻞ ﺯﻧﺪﮔﯽ ﺟﻨﻮﮞ ﮬﯽ ﻧﮩﯿﮟ
    ﺁﺅ ﺍﺱ ﺗﯿﺮﮦ ﺑﺨﺖ ﺩﻧﯿﺎ ﻣﯿﮟ
    ﻓﮑﺮ ﮐﯽ ﺭﻭﺷﻨﯽ ﮐﻮ ﻋﺎﻡ ﮐﺮﯾﮟ
    ﺍﻣﻦ ﮐﻮ ﺟﻦ ﺳﮯ ﺗﻘﻮﯾﺖ ﭘﮩﻨﭽﮯ
    ﺍﯾﺴﯽ ﺟﻨﮕﻮﮞ ﮐﺎ ﺍﮨﺘﻤﺎﻡ ﮐﺮﯾﮟ
    ﺟﻨﮓ، ﻭﺣﺸﺖ ﺳﮯ ﺑﺮﺑﺮﯾﺖ ﺳﮯ
    ﺍﻣﻦ ﺗﮩﺬﯾﺐ ﻭﺍﺭﺗﻘﺎ ﮐﮯ ﻟﺌﮯ
    ﺟﻨﮓ، ﻣﺮﮒ ﺁﻓﺮﯾﮟ ﺳﯿﺎﺳﺖ ﺳﮯ
    ﺍﻣﻦ، ﺍﻧﺴﺎﻥ ﮐﯽ ﺑﻘﺎ ﮐﮯ ﻟﺌﮯ
    ﺟﻨﮓ ، ﺍﻓﻼﺱ ﺍﻭﺭ ﻏﻼﻣﯽ ﺳﮯ
    ﺍﻣﻦ، ﺑﮩﺘﺮ ﻧﻈﺎﻡ ﮐﯽ ﺧﺎﻃﺮ
    ﺟﻨﮓ، ﺑﮭﭩﮑﯽ ﮨﻮﺋﯽ ﻗﯿﺎﺩﺕ ﺳﮯ
    ﺍﻣﻦ ﺑﮯ ﺑﺲ ﻋﻮﺍﻡ ﮐﯽ ﺧﺎﻃﺮ
    ﺟﻨﮓ ﺳﺮﻣﺎﺋﮯ ﮐﮯ ﺗﺴﻠﻂ ﺳﮯ
    ﺍﻣﻦ، ﺟﻤﮩﻮﺭ ﮐﯽ ﺧﻮﺷﯽ ﮐﮯ ﻟﺌﮯ
    ﺟﻨﮓ، ﺟﻨﮕﻮﮞ ﮐﮯ ﻓﻠﺴﻔﮯ ﮐﮯ ﺧﻼﻑ
    ﺍﻣﻦ، ﭘﺮ ﺍﻣﻦ ﺯﻧﺪﮔﯽ ﮐﮯ ﻟﺌﮯ
     
  2. Rania

    Rania VIP Member

    Buhat umda
     
  3. UrduLover

    UrduLover Work hard. Dream big. Staff Member

  4. BlackSoul

    BlackSoul Guest

Share This Page