1. السلام علیکم
    آئی ٹی استاد ڈاٹ کام وزٹ کرنے کا شکریہ۔ ہم آپکو خوش آمدید کہتے ہیں۔ فورم کے کسی بھی حصے کو استعمال میں لانے جیسے پوسٹنگ کرنے، کوئی تھریڈ دیکھنے یا لکھنے کسی بھی ممبر سے رابطہ کرنے کے لئے اور فورم کے دیگر آلات وغیرہ کا استعمال کرنے کے لئے آپکا رجسٹر ہونا ضروری ہے۔ رجسٹر ہونے کے لئے یہاں کلک کریں۔ رجسٹریشن حاصل کرنا بالکل آسان اور بالکل مفت ہے۔

شاعر احمد فراز:اِس کا سوچا بھی نہ تھا اب کے جو تنہا گزر

Discussion in 'Ahmad Faraz' started by PakWatan, Nov 7, 2016.

  1. PakWatan

    PakWatan Regular Member

    اِس کا سوچا بھی نہ تھا اب کے جو تنہا گزری
    وہ قیامت ہی غنیمت تھی جو یکجا گزری

    آ گلے تجھ کو لگا لوں میرے پیارے دشمن
    اک مری بات نہیں تجھ پہ بھی کیا کیا گزری

    میں تو صحرا کی تپش، تشنہ لبی بھول گیا
    جو مرے ہم نفسوں پر لب ِدریا گزری

    آج کیا دیکھ کے بھر آئی ہیں تیری آنکھیں
    ہم پہ اے دوست یہ ساعت تو ہمیشہ گزری

    میری تنہا سفری میرا مقدر تھی فراز
    ورنہ اس شہر ِتمنا سے تو دنیا گزری

    Hello guest, Thank you for Register or you log to see the links!

     
    UrduLover likes this.
  2. IQBAL HASSAN

    IQBAL HASSAN Super Moderators

    بہت ہی زبردست
    بہت اچھا لگا اپ کا تھریڈ پڑھ کر
    اپ کابے حد شکریہ
     
    UrduLover likes this.
  3. UrduLover

    UrduLover Work hard. Dream big. Staff Member

    Thank you for this poem.
     
  4. Rania

    Rania VIP Member

    Buhat Umda
    Thanks for sharing
     
  5. muzafar ali

    muzafar ali Legend

    Boht lajawab sharing
     
  6. Ghulam Rasool

    Ghulam Rasool Super Moderators

    niceeeeeeeeeeeeeeeeeeeeee
     

Share This Page