1. السلام علیکم
    آئی ٹی استاد ڈاٹ کام وزٹ کرنے کا شکریہ۔ ہم آپکو خوش آمدید کہتے ہیں۔ فورم کے کسی بھی حصے کو استعمال میں لانے جیسے پوسٹنگ کرنے، کوئی تھریڈ دیکھنے یا لکھنے کسی بھی ممبر سے رابطہ کرنے کے لئے اور فورم کے دیگر آلات وغیرہ کا استعمال کرنے کے لئے آپکا رجسٹر ہونا ضروری ہے۔ رجسٹر ہونے کے لئے یہاں کلک کریں۔ رجسٹریشن حاصل کرنا بالکل آسان اور بالکل مفت ہے۔

ﻭﮦ ﺑﺎﺗﯿﮟ ﺗﺮﯼ ﻭﮦ ﻓﺴﺎﻧﮯ ﺗﺮﮮ

Discussion in 'Poetry' started by Ahsaaan, Dec 7, 2015.

  1. Ahsaaan

    Ahsaaan Senior Member




    ﻭﮦ ﺑﺎﺗﯿﮟ ﺗﺮﯼ ﻭﮦ ﻓﺴﺎﻧﮯ ﺗﺮﮮ

    ﻭﮦ ﺑﺎﺗﯿﮟ ﺗﺮﯼ ﻭﮦ ﻓﺴﺎﻧﮯ ﺗﺮﮮ
    ﺷﮕﻔﺘﮧ ﺷﮕﻔﺘﮧ ﺑﮩﺎﻧﮯ ﺗﺮﮮ

    ﺑﺲ ﺍﯾﮏ ﺩﺍﻍِ ﺳﺠﺪﮦ ﻣﺮﯼ ﮐﺎﺋﻨﺎﺕ
    ﺟﺒﯿﻨﯿﮟ ﺗﺮﯼ ، ﺁﺳﺘﺎﻧﮯ ﺗﺮﮮ

    ﺑﺲ ﺍﯾﮏ ﺯﺧﻢِ ﻧﻈﺎﺭﮦ، ﺣﺼﮧ ﻣﺮﺍ
    ﺑﮩﺎﺭﯾﮟ ﺗﺮﯼ، ﺁﺷﯿﺎﻧﮯ ﺗﺮﮮ

    ﻓﻘﯿﺮﻭﮞ ﮐﯽ ﺟﮭﻮﻟﯽ ﻧﮧ ﮨﻮﮔﯽ ﺗﮩﯽ
    ﮨﯿﮟ ﺑﮭﺮ ﭘﻮﺭ ﺟﺐ ﺗﮏ ﺧﺰﺍﻧﮯ ﺗﺮﮮ

    ﻓﻘﯿﺮﻭﮞ ﮐﺎ ﺟﻤﮕﮭﭧ ﮔﮭﮍﯼ ﺩﻭ ﮔﮭﮍﯼ
    ﺷﺮﺍﺑﯿﮟ ﺗﺮﯼ، ﺑﺎﺩﮦ ﺧﺎﻧﮯ ﺗﺮﮮ

    ﺿﻤﯿﺮِ ﺻﺪﻑ ﻣﯿﮟ ﮐﺮﻥ ﮐﺎ ﻣﻘﺎﻡ
    ﺍﻧﻮﮐﮭﮯ ﺍﻧﻮﮐﮭﮯ ﭨﮭﮑﺎﻧﮯ ﺗﺮﮮ

    ﺑﮩﺎﺭ ﻭ ﺧﺰﺍﮞ ﮐﻢ ﻧﮕﺎﮨﻮﮞ ﮐﮯ ﻭﮨﻢ
    ﺑﺮﮮ ﯾﺎ ﺑﮭﻠﮯ، ﺳﺐ ﺯﻣﺎﻧﮯ ﺗﺮﮮ

    ﻋﺪﻡ ﺑﮭﯽ ﮨﮯ ﺗﯿﺮﺍ ﺣﮑﺎﯾﺖ ﮐﺪﮦ
    ﮐﮩﺎﮞ ﺗﮏ ﮔﺌﮯ ﮨﯿﮟ ﻓﺴﺎﻧﮯ ﺗﺮﮮ

     
  2. Ziaullah mangal

    Ziaullah mangal Well Wishir

Share This Page