1. السلام علیکم
    آئی ٹی استاد ڈاٹ کام وزٹ کرنے کا شکریہ۔ ہم آپکو خوش آمدید کہتے ہیں۔ فورم کے کسی بھی حصے کو استعمال میں لانے جیسے پوسٹنگ کرنے، کوئی تھریڈ دیکھنے یا لکھنے کسی بھی ممبر سے رابطہ کرنے کے لئے اور فورم کے دیگر آلات وغیرہ کا استعمال کرنے کے لئے آپکا رجسٹر ہونا ضروری ہے۔ رجسٹر ہونے کے لئے یہاں کلک کریں۔ رجسٹریشن حاصل کرنا بالکل آسان اور بالکل مفت ہے۔

سیلف میڈ لوگوں کا المیہ

Discussion in 'Amjad Islam Amjad' started by Ziaullah mangal, Dec 9, 2015.

  1. Ziaullah mangal

    Ziaullah mangal Well Wishir

    سیلف میڈ لوگوں کا المیہ

    روشنی مزاجوں کا کیا عجب مقدر ھے
    زندگی کے رستے میں ۔ ۔ بچھنے والے کانٹوں کو
    راہ سے ہٹانے میں
    ایک ایک تنکے سے آشیاں بنانے میں
    خوشبوئیں پکڑنے میں ۔ ۔ گلستاں سجانے میں
    عمر کاٹ دیتے ھیں
    عمر کاٹ دیتے ھیں
    اور اپنے حصے کے پھول بانٹ دیتے ھیں
    کیسی کیسی خواہش کو قتل کرتے جاتے ھیں
    درگزر کے گلشن میں ابر بن کے رہتے ھیں
    صبر کے سمندر میں ۔ ۔ کشتیاں چلاتے ھیں

    یہ نہیں کہ ان کو اس روز و شب کی کاہش کا
    کچھ صلہ نہیں ملتا
    مرنے والی آسوں کا ۔ ۔ خون بہا نہیں ملتا

    زندگی کے دامن میں ۔ ۔ جس قدر بھی خوشیاں ھیں
    سب ھی ھاتھ آتی ھیں
    سب ھی مل بھی جاتی ھیں
    وقت پر نہیں ملتیں ۔ ۔ وقت پر نہیں آتیں

    یعنی ان کو محنت کا اجر مل تو جاتا ھے
    لیکن اس طرح جیسے
    قرض کی رقم کوئی قسط قسط ہو جائے
    اصل جو عبارت ھو ۔ ۔ پسِ نوشت ھو جائے

    فصلِ گُل کے آخر میں پھول ان کے کھلتے ھیں
    ان کے صحن میں سورج ۔ ۔ دیر سے نکلتے ھیں​

     
  2. IQBAL HASSAN

    IQBAL HASSAN Management


    بہت ھی عمدہ تریڈ بنایا ھے
    اچھے تھریڈ کو ھمارے ساتھ شئیرکرنے کا شکریہ
    مزید اچھی شیرینگ کا انتیظار رھے گا ۔
     

Share This Page