1. السلام علیکم
    آئی ٹی استاد ڈاٹ کام وزٹ کرنے کا شکریہ۔ ہم آپکو خوش آمدید کہتے ہیں۔ فورم کے کسی بھی حصے کو استعمال میں لانے جیسے پوسٹنگ کرنے، کوئی تھریڈ دیکھنے یا لکھنے کسی بھی ممبر سے رابطہ کرنے کے لئے اور فورم کے دیگر آلات وغیرہ کا استعمال کرنے کے لئے آپکا رجسٹر ہونا ضروری ہے۔ رجسٹر ہونے کے لئے یہاں کلک کریں۔ رجسٹریشن حاصل کرنا بالکل آسان اور بالکل مفت ہے۔

فنکار ہے تو ہاتھہ پہ

Discussion in 'Mohsin Naqvi' started by Ziaullah mangal, Dec 9, 2015.

  1. Ziaullah mangal

    Ziaullah mangal Well Wishir


    فنکار ہے تو ہاتھہ پہ

    فنکار ہے تو ہاتھہ پہ سورج سجا کے لا
    بجھتا ہوا دیا......... نہ مقابل ہوا کے لا

    دریا کا انتقام ڈبو دے نہ گھر تیرا
    ساحل سے روز روز نہ کنکر اٹھا کے لا

    اب اختتام کو ہے سخی حرف التماس
    کچھہ ہے تو اب وہ سامنے دست دعا کے لا

    پیماں وفا کے باندھ مگر سوچ سوچ کر
    اس ابتدا میں یوں نہ سخن انتہا کے لا

    آرائش جراحت یاراں کی بزم میں
    جو زخم دل میں ہیں سبھی تن پر سجا کے لا

    تھوڑی سی اور موج میں آ اے ہوائے گل
    تھوڑی سی اس کے جسم کی چرا کے لا

    گر سوچنا ہیں اہل مشیت کے حوصلے
    میداں سے گھر میں ایک تو میت اٹھا کے لا

    محسن اب اس کا نام ہے سب کی زبان پر
    کس نے کہا کہ اس کو غزل میں سجا لا​

     
  2. Aqibimtiaz786

    Aqibimtiaz786 mr.anjaan

    Bht Khoooob Share Krne Ka Shukriya.........
     
  3. IQBAL HASSAN

    IQBAL HASSAN Management


    ●▬▬▬▬▬▬▬▬ஜ۩۞۩ஜ▬▬▬ ▬▬▬▬●
    بہت ہی زبردست
    بہت اچھا لگا اپ کا تھریڈ پڑھ کر
    اپ کابے حد شکریہ
    ●▬▬▬▬▬▬▬▬ஜ۩۞۩ஜ▬▬▬ ▬▬▬▬●

     

Share This Page