1. السلام علیکم
    آئی ٹی استاد ڈاٹ کام وزٹ کرنے کا شکریہ۔ ہم آپکو خوش آمدید کہتے ہیں۔ فورم کے کسی بھی حصے کو استعمال میں لانے جیسے پوسٹنگ کرنے، کوئی تھریڈ دیکھنے یا لکھنے کسی بھی ممبر سے رابطہ کرنے کے لئے اور فورم کے دیگر آلات وغیرہ کا استعمال کرنے کے لئے آپکا رجسٹر ہونا ضروری ہے۔ رجسٹر ہونے کے لئے یہاں کلک کریں۔ رجسٹریشن حاصل کرنا بالکل آسان اور بالکل مفت ہے۔

بھڑکائیں میری پیاس کو

Discussion in 'Mohsin Naqvi' started by Ziaullah mangal, Dec 9, 2015.

  1. Ziaullah mangal

    Ziaullah mangal Well Wishir


    بھڑکائیں میری پیاس کو

    بھڑکائیں میری پیاس کو اکثر تیری آنکھیں
    صحرا میرا چہرہ ہے تو سمندر تیری آنکھیں

    پھر کون بھلا دادِ تبسم انھیں دے گا
    روئیں گی بہت مجھ سے بچھڑ کر تیری آنکھیں

    بوجھل نظر آتی ہیں بظاہر مجھے لیکن
    کھلتی ہیں بہت دل میں اُتر کر تیری آنکھیں

    اب تک میری یادوں سے مٹائے نہیں مٹتا
    بھیگی ہوئی اک شام کا منظر تیری آنکھیں

    ممکن ہو تو اک تازہ غزل اور بھی کہہ لوں
    پھر اوڑھ نہ لیں خواب کی چادر تیری آنکھیں

    یوں دیکھتے رہنا اسے اچھا نہیں محسن
    وہ کانچ کا پیکر ہے تو پتھر تیری آنکھیں ​

     
    IQBAL HASSAN likes this.
  2. Aqibimtiaz786

    Aqibimtiaz786 mr.anjaan

    Bht Khoooob Share Krne Ka Shukriya.........
     
  3. IQBAL HASSAN

    IQBAL HASSAN Super Moderators

    بھڑکائیں میری پیاس کو اکثر تیری آنکھیں
    صحرا میرا چہرہ ہے تو سمندر تیری آنکھیں

    ●▬▬▬▬▬▬▬▬ஜ۩۞۩ஜ▬▬▬ ▬▬▬▬●
    بہت ہی زبردست
    بہت اچھا لگا اپ کا تھریڈ پڑھ کر
    اپ کابے حد شکریہ
    ●▬▬▬▬▬▬▬▬ஜ۩۞۩ஜ▬▬▬ ▬▬▬▬●
     

Share This Page