1. السلام علیکم
    آئی ٹی استاد ڈاٹ کام وزٹ کرنے کا شکریہ۔ ہم آپکو خوش آمدید کہتے ہیں۔ فورم کے کسی بھی حصے کو استعمال میں لانے جیسے پوسٹنگ کرنے، کوئی تھریڈ دیکھنے یا لکھنے کسی بھی ممبر سے رابطہ کرنے کے لئے اور فورم کے دیگر آلات وغیرہ کا استعمال کرنے کے لئے آپکا رجسٹر ہونا ضروری ہے۔ رجسٹر ہونے کے لئے یہاں کلک کریں۔ رجسٹریشن حاصل کرنا بالکل آسان اور بالکل مفت ہے۔

یہ بات یہ تبسم یہ ناز یہ نگاہیں

Discussion in 'Design Poetry sharing by normal member' started by nizamuddin, Dec 11, 2015.

  1. nizamuddin

    nizamuddin Regular Member

    یہ بات یہ تبسم یہ ناز یہ نگاہیں
    آخر تم ہی بتاؤ کیونکر نہ تم کو چاہیں
    اب سر اٹھا کے میں نے شکوؤں سے ہاتھ اٹھایا
    مرجاؤں گا ستم گر نیچی نہ کر نگاہیں
    کچھ گل ہی سے نہیں ہے روح نمو کو رغبت
    گردن میں خار کی بھی ڈالے ہوئے ہے بانہیں
    اللہ ری دل فریبی جلووں کے بانکپن کی
    محفل میں وہ جو آئے کج ہوگئیں کلاہیں
    یہ بزم جوش کس کے جلووں کی رہ گزر ہے
    ہر ذرے میں ہیں غلطاں اٹھتی ہوئی نگاہیں
    (جوش ملیح آبادی)

    [​IMG]
     

Share This Page