1. السلام علیکم
    آئی ٹی استاد ڈاٹ کام وزٹ کرنے کا شکریہ۔ ہم آپکو خوش آمدید کہتے ہیں۔ فورم کے کسی بھی حصے کو استعمال میں لانے جیسے پوسٹنگ کرنے، کوئی تھریڈ دیکھنے یا لکھنے کسی بھی ممبر سے رابطہ کرنے کے لئے اور فورم کے دیگر آلات وغیرہ کا استعمال کرنے کے لئے آپکا رجسٹر ہونا ضروری ہے۔ رجسٹر ہونے کے لئے یہاں کلک کریں۔ رجسٹریشن حاصل کرنا بالکل آسان اور بالکل مفت ہے۔

مسلسل روکتی ہوں اس کو

Discussion in 'Poetry' started by Ziaullah mangal, Dec 15, 2015.

  1. Ziaullah mangal

    Ziaullah mangal Well Wishir

    [​IMG]

    مسلسل روکتی ہوں اس کو

    مسلسل روکتی ہوں اس کو شہر دل میں آنے سے
    مگر وہ کوہ کن رکتا نہیں دیوار ڈھانے سے

    بھلا کیا دکھ کے آنگن میں سلگتی لڑکیاں جانے
    کہیں چھپتے ہیں آنسو آنچلوں میں منہ چھپانے سے

    ابھی تو فصل تازہ ہے ہمارے حرف و معنی کی
    ابھی ڈرتے نہیں ہم موسموں کے آنے جانے سے

    ابھی تو عشق میں آنکھیں بجھی ہیں دل سلامت ہے
    زمینیں بانجھ ہوتی ہیں کبھی فصلیں جلانے سے


    تجھے تنہا محبت کا یہ دریا پار کرنا ہے

    ندامت ہوگی اس کے حوصلوں کو آزمانے سے

    ہمیں کس ظرف کے کردار کے قصے سناتا ہے
    تجھے اے شہر ہم بھی جانتے ہیں اک زمانے سے

    تجھے بھی ضبط غم شوق نے پتھر بنا ڈالا
    تجھے اے دل بہت روکا تھا رسم و راہ نبھانے سے
    [​IMG]

     
  2. Ahsaaan

    Ahsaaan Senior Member

    عمدہ شئرنگ...
     
  3. MZFR

    MZFR Newbi

    boht khoob
     

Share This Page