1. السلام علیکم
    آئی ٹی استاد ڈاٹ کام وزٹ کرنے کا شکریہ۔ ہم آپکو خوش آمدید کہتے ہیں۔ فورم کے کسی بھی حصے کو استعمال میں لانے جیسے پوسٹنگ کرنے، کوئی تھریڈ دیکھنے یا لکھنے کسی بھی ممبر سے رابطہ کرنے کے لئے اور فورم کے دیگر آلات وغیرہ کا استعمال کرنے کے لئے آپکا رجسٹر ہونا ضروری ہے۔ رجسٹر ہونے کے لئے یہاں کلک کریں۔ رجسٹریشن حاصل کرنا بالکل آسان اور بالکل مفت ہے۔

Kisi ki aankh se sapne chura

Discussion in 'Roman Urdu Poetry' started by IQBAL HASSAN, Jan 12, 2016.

  1. IQBAL HASSAN

    IQBAL HASSAN Super Moderators


    :Laie_23:
    Kisi ki aankh se sapne chura kar kuch nahi milta
    Mandiron se chiragon ko bujha kar kuch nahi milta
    :Laie_23:
    Koi aik adh sapna ho to phir accha b lagta hai
    Hazaron khwab ankhon mei saja kar kuch nahi milta
    :Laie_23:
    Yeh accha hai ke aapas ke bharam na tootne payein
    Kabhi kabhi doston ko azma kar kuch nahi milta
    :Laie_23:
    Amal ki sookhti rag mei zara sa khoon shamil kar
    Mere humdam faqt batein bana kar kuch nahi milta
    :Laie_23:
    Mujhe aksar sitaron se yeh awaz aati hai
    Kisike hijar mei neendein ganwa kar kuch nahi milta
    :Laie_23:
    Jiggr ho jayega chalni yeh ankhein khoon royengi
    Ae dil Be?faiz logon se nibah kar kuch nahi milta
    :Laie_23:
    [​IMG]
     
  2. بھت عمدہ
    بہائی مزید پوسٹینگ کو جاری
    رکھیں
    ویسے شیئرینگ بھت عمدہ ہوتی ہے

    ماشاء اللہ بھائی ماشاء اللہ​
     

Share This Page