1. السلام علیکم
    آئی ٹی استاد ڈاٹ کام وزٹ کرنے کا شکریہ۔ ہم آپکو خوش آمدید کہتے ہیں۔ فورم کے کسی بھی حصے کو استعمال میں لانے جیسے پوسٹنگ کرنے، کوئی تھریڈ دیکھنے یا لکھنے کسی بھی ممبر سے رابطہ کرنے کے لئے اور فورم کے دیگر آلات وغیرہ کا استعمال کرنے کے لئے آپکا رجسٹر ہونا ضروری ہے۔ رجسٹر ہونے کے لئے یہاں کلک کریں۔ رجسٹریشن حاصل کرنا بالکل آسان اور بالکل مفت ہے۔

سیب طاقت اور قوت کا خزانہ

Discussion in 'Health & Diet' started by IQBAL HASSAN, Jan 16, 2016.

  1. IQBAL HASSAN

    IQBAL HASSAN Management


    سیب طاقت اور قوت کا خزانہ

    سیب کا رنگ سبز ، زرد اور سرخ ہوتا ہے سیب کا ذائقہ شریں ہے۔ اس کا مزاج گرم اور تر دوسرے درجے میں ہے۔ ترش سیب سرد و خشک ہوتا ہے ۔ سیب سے مربہ اور شربت بنا یا جاتا ہے۔اس کی مقدار خوراک سیب آدھ پاؤ، مربہ سیب ڈیڑھ تولہ، شربت چار تولے تک ہے۔ اس کے بے شمار فوائد ہیں۔
    سیب کے فوائد
    سیب مفرح دل و دماغ ہے۔ دل کو طاقت دیتا ہے۔ دل کی گھبراہٹ کی صورت میں تازہ سیب یا اس کا مربہ کھانا انتہائی مفید ہوتا ہے۔ اسمیں فولاد ، وٹامن اے کیلشیم ، فاسفورس پائے جاتے ہیں جو انسانی صحت کے لئے ضروری ہوتے ہیں۔ ا سکے علاوہ وٹامن بی اور سی بھی ہوتے ہیں ۔
    سیب قدرے قابض ہوتاہے۔ لیکن اس کا مربہ بھوک بڑھاتا ہے۔ گرمی کو تسکین دیتا ہے۔ خون صالح پیدا کرتاہے۔ بشرطیکہ صبح اور تیسرے پہر کھایا جائے۔ چہرے کا رنگ نکھار تا ہے۔ جگر کی اصلاح کرتا ہے اور اسے طاقت دیتا ہے معدہ کو طاقت دیتا ہے اور نظام معدہ کو درست کرتاہے۔
    ہانپنے اور خفقان میں مفید ہے ، سانس کی تنگی اور خشک کھانسی میں بے حد مفید ہے۔ سیب قے کو روکتا ہے اور متلی کےلئے مانع ہے۔ کمزور مر یضوں کےلئے بے حد مفید ہے۔
    سیب دل کو شگفتہ اور دماغ کو تر وتازہ کرتاہے اور اس وجہ سے پریشانی وغیرہ کی صورت میں انسانی جسم میں قوت مدافعت بڑھاتا ہے۔
    سیب پھلوں میں اپنی غذائی افادیت کی بنا پر خاص مقام رکھتا ہے۔ اگر روزانہ دو سیب کھا کر ایک پاو? دودھ صبح نہار منہ پیا جائے تو چھ ہفتوں میں انسانی صحت قابل رشک ہو جاتی ہے۔ رات کو سوتے وقت سیب کھانا قبض کشا اثر رکھتا ہے۔ معدہ کی کمزوری اور ضعف جگر کی صورت میں ترش سیب استعمال کرنا مفید ہوتا ہے۔ دماغی کام کرنے والوں کے لئے سیب کھانا قدرت کا بہترین تحفہ ہے۔ یہ خون میں سرخ ذارت پیدا کرتا ہے۔
    سیب کے جوس سے پیٹ اور انتڑیوں کے جراثیم دور ہو تے ہیں اور دافع بدبو بھی ہے۔ گردوں کی صفائی کےلئے سیب سے بہتراور کوئی چیز نہیں۔ سیب کے چھلکوں سے نہایت لذیذ اور خوشبو دار چائے تیار کی جا سکتی ہے۔ جو چالیس سال سے اوپر خواتین و حضرات کےلئے بے حد مفید ہے۔
    سیب کے چھلکوں کی چائے میں اگر لیموں اور شہد کا اضافہ کر لیا جائے تو یہ پیچش اور محرقہ بخار کی کمزوریوں کو دور کرتی ہے۔ اگر جوڑوں کے درد والے حضرات یہ چائے استعمال کریں تو انہیں خاصا فائدہ ہوتاہے۔ سیب دانتوں کو مضبوط کرتا ہے اس کے اجزاءدانتوں اور مسوڑھوں میں جذب ہو کر انہیں خاصا مضبوط کرتے ہیں۔
    ویسے تو سیب اپنے تمام فوائد کے ساتھ کسی بھی وقت کھایا جا سکتا ہے ۔ اگر سیب کو کھانے کے بعد کھایا جائے تو یہ ہاضمے میں مدد کرتا ہے۔ بچے کی پیدائش سے پہلے اگر سیب کا متواتر استعمال کیا جائے تو بچہ خوبصورت پیدا ہوتا ہے اور حاملہ عورت مختلف بیماریوں سے محفوظ بھی رہتی ہے۔ چھ ماہ کی عمر والے بچے کو دو چمچ سیب کا جو س روزانہ پلانے سے اس کی صحت میں اضافہ ہوتاہے اور چھوٹی موٹی بیماریاں بھی بچے کو نہیں لگتیں ۔ پیچش ، ٹائیفائیڈ ، تپ دق اور کھانسی میں سیب کا استعمال بے حد مفید ہوتاہے۔ دل و دماغ کی کمزوری کو دور کرنے کےلئے سیب کا مربہ کھانا بہت ضروری ہوتا ہے اس سے خون کی کمی بھی دور ہوتی ہے۔
    اعضائے رئیسہ کو طاقت دیتا ہے۔ اعصابی کمزوری اس کے مسلسل استعمال سے دور ہوتی ہے۔ سیب کا جوس جوش دے کر تین چار روز تک تقریبا ایک پاو? روزانہ پلایا جائے تو ہر نشہ کرنےو الے نشے کو چھوڑ دے گا۔
    مقوی دل، دماغ اور مقوی جگر مربہ تیار کرنے کےلئے عمدہ سیب ایک سیرلیں۔انہیں احتیاط سے چھیل کر ایک سیر پانی میں ڈال کر دو جوش دے کر اتار لیں۔ پانی سے سیب الگ الگ کر کے تین گنا ۔ تین سیر ( چینی ملا کر قوام تیار کریں پھر سیب اس قوام میں ملا دیں اور سیبوں کو کسی چھری سے ٹک لگائیں ۔ جب شیرہ گاڑھا ہو جائے توا تار لیں۔ ٹھنڈ ا ہونے پر کسی شیشے کے جار میں محفوظ کر لیں اور حسب ضرورت استعمال میں لائیں۔
    سیب کے مسلسل استعمال سے بدن میں پھرتی اور جسم میںچستی آجاتی ہے۔ سر درد کی صورت میں سیب کی نسوار استعمال کی جاتی ہے۔ جس میں خشک شدہ سیب ایک تولہ ، جنگلی اپلوں کی راکھ ایک تولہ کو اچھی طرح رگڑ کر ملا کر محفوظ کر لیں بوقت ضرورت ذرا سا سونگھنا فوری فائدہ دیتا ہے۔

    [​IMG]
     

Share This Page