1. السلام علیکم
    آئی ٹی استاد ڈاٹ کام وزٹ کرنے کا شکریہ۔ ہم آپکو خوش آمدید کہتے ہیں۔ فورم کے کسی بھی حصے کو استعمال میں لانے جیسے پوسٹنگ کرنے، کوئی تھریڈ دیکھنے یا لکھنے کسی بھی ممبر سے رابطہ کرنے کے لئے اور فورم کے دیگر آلات وغیرہ کا استعمال کرنے کے لئے آپکا رجسٹر ہونا ضروری ہے۔ رجسٹر ہونے کے لئے یہاں کلک کریں۔ رجسٹریشن حاصل کرنا بالکل آسان اور بالکل مفت ہے۔

بچھڑا ہے جو اک بار تو ملتے نہیں دیکھا

Discussion in 'Parveen Shakir' started by nizamuddin, Jan 19, 2016.

  1. nizamuddin

    nizamuddin Regular Member

    بچھڑا ہے جو اک بار تو ملتے نہیں دیکھا
    اس زخم کو ہم نے کبھی سلتے نہیں دیکھا
    اک بار جسے چاٹ گئی دھوپ کی خواہش
    پھر شاخ پہ اس پھول کو کھلتے نہیں دیکھا
    یک لخت گرا ہے تو جڑیں تک نکل آئیں
    جس پیڑ کو آندھی میں بھی ہلتے نہیں دیکھا
    کانٹوں میں گھرے پھول کو چوم آئے گی لیکن
    تتلی کے پروں کو کبھی چھلتے نہیں دیکھا
    کس طرح مری روح ہری کرگیا آخر
    وہ زیر جسے جسم میں کھلتے نہیں دیکھا
    (پروین شاکر)

    [​IMG]
     
    IQBAL HASSAN likes this.
  2. ءبھت خوب شاندار
     
  3. Aqibimtiaz786

    Aqibimtiaz786 mr.anjaan

    Bht Khoooob Share Krne Ka Shukriya.........
     
  4. IQBAL HASSAN

    IQBAL HASSAN Super Moderators

Share This Page