1. السلام علیکم
    آئی ٹی استاد ڈاٹ کام وزٹ کرنے کا شکریہ۔ ہم آپکو خوش آمدید کہتے ہیں۔ فورم کے کسی بھی حصے کو استعمال میں لانے جیسے پوسٹنگ کرنے، کوئی تھریڈ دیکھنے یا لکھنے کسی بھی ممبر سے رابطہ کرنے کے لئے اور فورم کے دیگر آلات وغیرہ کا استعمال کرنے کے لئے آپکا رجسٹر ہونا ضروری ہے۔ رجسٹر ہونے کے لئے یہاں کلک کریں۔ رجسٹریشن حاصل کرنا بالکل آسان اور بالکل مفت ہے۔

روٹھا تو شہرِ خواب کو غارت بھی کرگیا

Discussion in 'Mohsin Naqvi' started by nizamuddin, Jan 20, 2016.

  1. nizamuddin

    nizamuddin Well Wishir

    روٹھا تو شہرِ خواب کو غارت بھی کرگیا
    پھر مسکرا کے تازہ شرارت بھی کرگیا
    شاید اسے عزیز تھیں آنکھیں میری بہت
    وہ میرے نام اپنی بصارت بھی کرگیا
    منہ زور آندھیوں کی ہتھیلی پہ اک چراغ
    پیدا میرے لہو میں حرارت بھی کرگیا
    بوسیدہ بادبان کا ٹکڑا ہوا کے ساتھ
    طوفاں میں کشتیوں کی سفارش بھی کرگیا
    دل کا نگر اجاڑنے والا ہنر شناس
    تعمیر حوصلوں کی عمارت بھی کرگیا
    سب اہلِ شہر جس پہ اٹھاتے تھے انگلیاں
    وہ شہر بھر کو وجہ زیارت بھی کرگیا
    محسن یہ دل کہ اس سے بچھڑتا نہ تھا کبھی
    آج اس کو بھولنے کی جسارت بھی کرگیا
    (محسن نقوی)

    [​IMG]
     
    Moona likes this.
  2. Ab Ghafar Jamari

    Ab Ghafar Jamari Senior Member

    boht khoooooooob
     
  3. IQBAL HASSAN

    IQBAL HASSAN Management

    [​IMG]

    محسن یہ دل کہ اس سے بچھڑتا نہ تھا کبھی
    آج اس کو بھولنے کی جسارت بھی کرگیا
    [​IMG]

    بہت ھی عمدہ شیرینگ ھے ۔
    اپ کابہت شکریہ۔ نوازش ۔

    [​IMG]


     
  4. Aqibimtiaz786

    Aqibimtiaz786 mr.anjaan

    Bht Khoooob Share Krne Ka Shukriya.........
     
  5. Moona

    Moona Moderator

    اچھا انتخاب
    ہمارے ساتھ شیئر کرنے کا شکریہ
     

Share This Page