1. السلام علیکم
    آئی ٹی استاد ڈاٹ کام وزٹ کرنے کا شکریہ۔ ہم آپکو خوش آمدید کہتے ہیں۔ فورم کے کسی بھی حصے کو استعمال میں لانے جیسے پوسٹنگ کرنے، کوئی تھریڈ دیکھنے یا لکھنے کسی بھی ممبر سے رابطہ کرنے کے لئے اور فورم کے دیگر آلات وغیرہ کا استعمال کرنے کے لئے آپکا رجسٹر ہونا ضروری ہے۔ رجسٹر ہونے کے لئے یہاں کلک کریں۔ رجسٹریشن حاصل کرنا بالکل آسان اور بالکل مفت ہے۔

گھر کا رستہ بھی ملا تھا شاید

Discussion in 'Ahmad Faraz' started by nizamuddin, Jan 22, 2016.

  1. nizamuddin

    nizamuddin Regular Member

    گھر کا رستہ بھی ملا تھا شاید
    راہ میں سنگِ وفا تھا شاید

    اِک ہتھیلی پہ دیا ہے اب تک
    ایک سورج نہ بجھا تھا شاید

    اس قدر تیز ہوا کے جھونکے
    شاخ پر پھول کِھلا تھا شاید

    لوگ بے مہر نہ ہوتے ہوں گے
    وہم سا دل کو ہُوا تھا شاید

    خونِ دل میں تو ڈبویا تھا قلم
    اور پھر کچھ نہ لکھا تھا شاید

    تجھ کو بُھولے تو دعا تک بُھولے
    اور وہی وقتِ دعا تھا شاید

    موجہ ٴ رنگ بیاباں سے چلا
    یا کوئی آبلہ پا تھا شاید

    رُت کا ہر آن بدلتا لہجہ
    ہم سے کچھ پوچھ رہا تھا شاید

    کیوں ادا ؔ کوئی گریزاں لمحہ
    شعر سننے کو رُکا تھا شاید
    (ادا جعفری)
     
  2. IQBAL HASSAN

    IQBAL HASSAN Super Moderators

    [​IMG]

    گھر کا رستہ بھی ملا تھا شاید
    راہ میں سنگِ وفا تھا شاید

    اِک ہتھیلی پہ دیا ہے اب تک
    ایک سورج نہ بجھا تھا شاید

    اس قدر تیز ہوا کے جھونکے
    شاخ پر پھول کِھلا تھا شاید
    [​IMG]

    بہت ہی زبردست
    بہت اچھا لگا اپ کا تھریڈ پڑھ کر
    اپ کابے حد شکریہ

     
  3. IQBAL HASSAN

    IQBAL HASSAN Super Moderators

    [​IMG]

    گھر کا رستہ بھی ملا تھا شاید
    راہ میں سنگِ وفا تھا شاید

    اِک ہتھیلی پہ دیا ہے اب تک
    ایک سورج نہ بجھا تھا شاید

    اس قدر تیز ہوا کے جھونکے
    شاخ پر پھول کِھلا تھا شاید
    [​IMG]

    بہت ہی زبردست
    بہت اچھا لگا اپ کا تھریڈ پڑھ کر
    اپ کابے حد شکریہ

     

Share This Page