1. السلام علیکم
    آئی ٹی استاد ڈاٹ کام وزٹ کرنے کا شکریہ۔ ہم آپکو خوش آمدید کہتے ہیں۔ فورم کے کسی بھی حصے کو استعمال میں لانے جیسے پوسٹنگ کرنے، کوئی تھریڈ دیکھنے یا لکھنے کسی بھی ممبر سے رابطہ کرنے کے لئے اور فورم کے دیگر آلات وغیرہ کا استعمال کرنے کے لئے آپکا رجسٹر ہونا ضروری ہے۔ رجسٹر ہونے کے لئے یہاں کلک کریں۔ رجسٹریشن حاصل کرنا بالکل آسان اور بالکل مفت ہے۔

ویلنٹائن ڈے کی حقیقت

Discussion in 'Achi Batain' started by khan_111, Feb 12, 2016.

  1. khan_111

    khan_111 Regular Member


    ویلنٹائن ڈے کی حقیقت؟سوچئیے!

    ایک دن بعد 14فروری آ رہا ہے جس کو نئی نسل ویلنٹائن ڈے کے طور پر مناتی ہے۔آج اپنی ڈوبتی تہذیب کو سہارا دینے کے لئے اس فضول رسم پر بات کرنی ہے، سب سے پہلے بتانا مقصو دہے ویلنٹائن کیا ہے۔
    ایک یہودی تھا جس کا نام ??ویلنٹائن?? تھا، اس نے شادی سے پہلے لڑکے لڑکی کے بیچ زنا کو جائز قرار دیا تھا اسی بات پر انگلینڈ کی گورنمنٹ نے اسے 14فروری کو پھانسی کی سزا دی تھی اس دن کو انگلینڈ کی نئی نسل نے اس کی یاد میں منانا شروع کر دیا افسوس صد افسوس کہ اب مسلمانوں نے بھی اس بے حیا اور بے شرم نسل کی طرح اس دن کو منانا شروع کر دیا ہے۔ رسول اللہؐ نے فرمایا جو شخص جس قوم کی مشابہت کرے گا وہ انہی میں سے اٹھایا جائے گا۔
    اس سے پہلے مزید لکھوں مولانا رومی کی حکایت یاد آ گئی۔ جس میں فرماتے ہیں:
    کل میں ایک چست و چالانک اور ناسمجھ نوجوان تھا۔ میرا خیال تھا میں ساری دنیا کو بدل ڈالوں گا یہ کوئی بڑی بات نہیں!آج میں ایک تھکا ہوا سمجھدار بوڑھا آدمی ہوں میرا خیال ہے میں خود کو بدل ڈالوں یہ بہت بڑی بات ہے۔
    ایک لطیفہ کے طور پر واٹس اپ پر آنے والے میسج بتانا چاہتا ہوں جو ویلنٹائن ڈے کے موقع پر ایک دوست دوسرے دوست سے پوچھتا ہے۔ یار آپ نے اپنی دوست کو کیا تحفہ دیا دوست خوشی خوشی بتاتا ہے تحفہ کی تفصیل پھر دوست پوچھتا ہے آپ کی بہن کو کیا تحفہ ملا اس پر دوست غصہ کرتا ہے اور ناراض ہو جاتا ہے۔ ہم دوسروں کی بہنوں اور بیٹیوں کو ویلنٹائن ڈے پرتحائف دینے کی باتیں پیغامات خوشی خوشی بتاتے اور موبائل پرشیئر کرتے ہیں یہ کیوں بھول جاتے ہیں ہماری بیٹیاں بیٹے بہنیں بھی اسی معاشرے کا حصہ ہیں۔ ہماری ثقافت کا جنازہ کیسے نکلا تہذیبی روایات کیسے دفن ہو رہی ہیں۔ کسی چوک پر غبارے فروخت کرنے والے سے پوچھیں کہ سرخ غبارہ جو دل بنا ہوا ہے کہاں سے آیا تو جواب نہیں دے سکے گا کون سپلائی کرتا ہے گلاب کے پھول کیوں کم پڑ جاتے ہیں یہ علیحدہ موضوع ہے پھر کسی وقت لکھوں گا البتہ مغربی تہذیب ہمارے اوپر کیسے مسلط ہوئی وہ دن گئے جب ہم مغرب سے کہتے تھے۔ تمہاری تہذیب آپ اپنے خنجر سے خودکشی کرے گی۔ وہ ہمیں ساتھ لئے بغیر مرنے کا ارادہ نہیں رکھتے ہم ان کے بغیر جینے کے روادار نہیں یہ موت کب سے ہمارے دروازوں پر دستک دے رہی ہے۔
    باؤلا جس کو کاٹ لے باؤلا کر دے ایک نہایت کالی باؤلی آندھی اب ہر ملک کے دروازے کھٹکھٹا رہی ہے۔ لبرل، سیکولر ماڈرنسٹ سب اپنا اپنا کام کریں گے اور تاریخ کے اس فساد عظیم کا راستہ صاف کرتے کرتے رخصت ہوں گے۔تمام کا پیکیج ایک ہے، ہر ایک کو یہ پیکیج پورے کا پورا لینا ہے۔ اس پیکیج کے حصے کرنا ممکن نہیں ہے۔
    اہل پاکستان اس کالی اندھی کے مقابلے پر نہیں اٹھیں گے تو بگڑی ہوئی بے ہودہ نسل آپ کے مال روڈ لبرٹی اور آپ کے سوک سنٹر کے اس پاس نکلا ہی چاہتے ہیں۔ اس بدبودار مخلوق کی ذات کیا ہے۔سید قطب کے الفاظ کے مطابق دن کے وقت مشین رات کے وقت حیوان، حیوان بھی ایسا ویسا نہیں! ہم آج سماجی جنگ کے گھمسان میں ہیں جبکہ ہمارے صالحین اپنی نیکی کے نشے میں مست ہیں۔
    ہماری شریف زادیوں کے سرکی چادر تو کب کی فسانہ ہوئی۔ وہ اپنے ساتھ نہ جانے کیا کچھ لے گئی۔ بس یہ دیکھے اتنا سا لباس بھی آپ کی آبرو تن پر کب تک سلامت رہتا ہے۔ تعلیم کا عفریت اور ابلاغ کا بھیڑیا کس فنکاری اور مشاقی کے ساتھ نمازیوں، روزہ داروں، حاجیوں، عبادت گزاروں اور علماء و فضلا ء و مبلغین کے زیر تماشا ہماری بچیوں کا لبادہ نوچتا چلا جا رہا ہے۔ کیا ہوا ہماری بیٹی سربازار ??لباس?? اور روایات کے بوجھ سے ہلکی ہی تو کی جا رہی ہے ہر سال اس فیبرک کے کچھ تند نکالے جاتے ہیں! ہوتے ہوتے بہت اترا پھر بھی مغرب جتنا نہیں آپ خوا مخوا پریشان ہوتے ہیں وہاں تو آپ کو پتہ ہے حضرات گرامی خاطر جمع رکھیے۔ سب ادھر ہی جا رہے ہیں۔ ایک دم برہنہ تو نہیں ہوئی ہماری لخت جگر جتنا ہمیں ہضم ہوا اتنا ہی ہوئی۔
    اب ہمارا ہاضمہ تیز کرنے کے لئے وہ زور اثر خوارکیں جو انفرمیشن ریوولیشن کی پٹریوں میں ڈال کر ہمیں دی جا رہی ہیں وہ اپنا جادو دکھائیں گی۔
    میرے دوست آپ کیا کر سکتے ہیں؟ اس کا جائزہ ضرور لیں آپ باپ ہیں، بھائی ہیں، خاوند ہیں، استاد ہیں، امام مسجد ہیں، ڈاکٹر ہیں، مالی ہیں، صحافی ہیں،انجینئر ہیں، بیورو کریٹ ہیں، ایک دفعہ ضرور سوچئے ہم حقیقی راستے سے کیسے بھٹک گئے ہیں۔ خاموش رہنے سے کیا کیا نقصانات ہو رہے ہیں اور آئندہ ہوں گے ہماری آواز بلند کرنے سے ہمارے سوچنے سے یا ہم اگر کچھکردار ادا کرنے کی پوزیشن میں ہیں تو خدارا کر گزریئے، کم از کم اپنے گھروں کو تو کنٹرول کر لیجئے۔ ??خدا نے آج تک اس قوم کی حالت نہیں بدلی نہ ہو جس کو خیال آپ اپنی حالت کے بدلنے کا

     
  2. whaaaa khan g wahhhhh
     
  3. Azeem007

    Azeem007 Mobile Expert

    whaaaa khan
     

Share This Page