1. السلام علیکم
    آئی ٹی استاد ڈاٹ کام وزٹ کرنے کا شکریہ۔ ہم آپکو خوش آمدید کہتے ہیں۔ فورم کے کسی بھی حصے کو استعمال میں لانے جیسے پوسٹنگ کرنے، کوئی تھریڈ دیکھنے یا لکھنے کسی بھی ممبر سے رابطہ کرنے کے لئے اور فورم کے دیگر آلات وغیرہ کا استعمال کرنے کے لئے آپکا رجسٹر ہونا ضروری ہے۔ رجسٹر ہونے کے لئے یہاں کلک کریں۔ رجسٹریشن حاصل کرنا بالکل آسان اور بالکل مفت ہے۔

ستم ظریف سمجھدار ہوتا جاتا ہے فقیہہ شہر بھ&#17

Discussion in 'Urdu Shair or Qita' started by Admin, Jun 27, 2016.

  1. Admin

    Admin Cruise Member Staff Member

    ستم ظریف سمجھدار ہوتا جاتا ہے
    فقیہہ شہر بھی مےخوار ہوتا جاتا ہے

    کہاں سے حسن و جوانی کی جوت پھوٹی ہے
    تمام شہر طرح دار ہوتا جاتا ہے

    قریب دیکھ کے نگاہ اک پری وش کی
    مجھے بھی عشق کا آزار ہوتا جاتا ہے

    یہ کیا سلیقہؑ رنگ و بو ہے صبا
    جو غنچہ کھلتا ہے، بیمار ہوتا جاتا ہے

    ستم گرو! کسی مرگِ حسیں کو دو آواز
    عدم حیات سے بیزار ہوتا جاتا ہے

    عبدالحمید عدم
     

Share This Page