1. السلام علیکم
    آئی ٹی استاد ڈاٹ کام وزٹ کرنے کا شکریہ۔ ہم آپکو خوش آمدید کہتے ہیں۔ فورم کے کسی بھی حصے کو استعمال میں لانے جیسے پوسٹنگ کرنے، کوئی تھریڈ دیکھنے یا لکھنے کسی بھی ممبر سے رابطہ کرنے کے لئے اور فورم کے دیگر آلات وغیرہ کا استعمال کرنے کے لئے آپکا رجسٹر ہونا ضروری ہے۔ رجسٹر ہونے کے لئے یہاں کلک کریں۔ رجسٹریشن حاصل کرنا بالکل آسان اور بالکل مفت ہے۔

غیرمسلم افرادکی مدد کرنا

Discussion in 'General Topics Of Islam' started by IQBAL HASSAN, Nov 28, 2016.

  1. IQBAL HASSAN

    IQBAL HASSAN Management

    [​IMG]

    غیرمسلم افرادکی مدد کرنا


    اسلام نے غیر مسلموں کے ساتھ معاشرتی اور اخلاقی تعلقات کی تاکید کی ہے۔ ارشاد خداوندی ہے :لا ینھکم اللہ عن الذین لم یقاتلوکم فی الدین ولم یخرجوکم من دیارکم ان تبروھم وتقسطوا الیھم ،ان اللہ یحب المقسطین ’’اللہ تعالیٰ تمہیں اس بات سے منع نہیں کرتا کہ تم ان لوگوں کے ساتھ حسن سلوک اور عدل و انصاف کا برتاؤ کرو جنھوں نے تم سے دین کے معاملے میں جنگ نہیں کی اور نہ تمہیں تمہارے گھروں سے نکالا۔ اللہ تعالیٰ عدل و انصاف کرنے والوں کو پسند کرتاہے۔‘‘ (الممتحنۃ : 8) حدیث شریف میں بلالحاظِ مذہب وملت کسی بھی مصیبت زدہ کی مددکرنے کوباعث اجروثواب قراردیاگیا ہے ،غیرمسلم بے سہارا افراد پر انفاق کرنا اور مصیبت و آفت میں ان کے ساتھ ہمدردی و تعاون کرنا اہل اسلام کا خاص وصف ہے ، حضور اکرم صلی اللہ علیہ وسلم نے اپنے فعل مبارک سے مسلمانوں کو جو نمونۂ عمل عنایت فرمایا اس کی ایک مثال یہ حدیث پاک ہے:ان النبی صلی اللہ علیہ وسلم بعث خمس مائة دینارالی مکة حین قحطواوامربدفعهاالی ابی سفیان بن حرب وصفوان بن امیة لیفرقا علی الفقراء اهل مکة ۔ ایک سال مکہ مکرمہ کے لوگ قحط میں مبتلا ہوگئے تو حضرت رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے ابوسفیان بن حرب اور صفوان بن امیہ کے پاس پانچ سو درہم روانہ کئے تاکہ وہ مکہ کے ضرورت مندوں اور محتاجوں میں تقسیم کریں ۔(رد المحتار،ج2 ،کتاب الزکوۃ ،باب مصرف الزکوۃ والعشر،ص92) البتہ زکوۃ کی رقم غیرمسلمین کے لئے خرچ نہیں کی جاسکتی ،انکے لئے نفلی صدقات سے تعاون کیاجائے ۔ مصیبت زدہ افراد کا تعاون کرنے والوں کے لئے احادیث مبارکہ میں بشارتیں آئی ہیں، چنانچہ مسند ابو یعلی ،شعب الایمان اور مجمع الزوائد میں حدیث مبارک ہے: قال رسول اللہ صلی اللہ علیہ و سلم : من أغاث ملهوفا کتب اللہ له ثلاثة و سبعین حسنة : واحدة منهن یصلح اللہ بها له أمر دنیاه و آخرته و اثنتین و سبعین من الدرجات- ترجمہ: حضرت رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے ارشاد فرمایا:جو شخص کسی مصیبت زدہ کی مدد کریگا تو اللہ تعالی اس کے لئے تہتر(73)قسم کی نیکیاں لکھ دیتا ہے،جن میں ایک نیکی کی برکت سے اس کی دنیا وآخرت کے معاملات کو اللہ تعالی درست فرمادیگا،اور بقیہ بہتر(72)نیکیاں اس کے درجات کی بلندی کے لئے ہونگیں ( مسند ابو یعلی، مسند انس بن مالک رضی اللہ عنہ،حدیث نمبر:4266) جامع ترمذی اور سنن ابو داؤد میں حدیث مبارک ہے:وعن عبداللہ بن عمرو قال : قال رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم : الراحمون یرحمهم الرحمن ارحموا من فی الأرض یرحمکم من فی السماء ۔ ترجمہ:سیدنا عبد اللہ بن عمرو رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ حضور اکرم صلی اللہ علیہ وسلم نے ارشاد فرمایا:لوگوں سے رحمدلی سے پیش آنے والوں پر خداء رحمن مہربانی فرماتا ہے،زمین پر رہنے والوں پر رحم کرو آسمان والا تم پر رحم فرمائے گا-( جامع ترمذی ، باب ما جاء فی رحمۃ المسلمین، حدیث نمبر: 1924 سنن ابو داؤد، کتاب الأدب ، باب فی الرحمۃ ، حدیث نمبر 4941) واللہ اعلم بالصواب – سیدضیاءالدین عفی عنہ

    [​IMG]

     
  2. muzafar ali

    muzafar ali Legend

    Nice sharing
     
  3. Ghulam Rasool

    Ghulam Rasool Super Moderators

    very nice sharing dear ..................................
     

    Attached Files:

Share This Page