1. السلام علیکم
    آئی ٹی استاد ڈاٹ کام وزٹ کرنے کا شکریہ۔ ہم آپکو خوش آمدید کہتے ہیں۔ فورم کے کسی بھی حصے کو استعمال میں لانے جیسے پوسٹنگ کرنے، کوئی تھریڈ دیکھنے یا لکھنے کسی بھی ممبر سے رابطہ کرنے کے لئے اور فورم کے دیگر آلات وغیرہ کا استعمال کرنے کے لئے آپکا رجسٹر ہونا ضروری ہے۔ رجسٹر ہونے کے لئے یہاں کلک کریں۔ رجسٹریشن حاصل کرنا بالکل آسان اور بالکل مفت ہے۔

بہوکے ساتھ ساس اورخسرکا رویہ

Discussion in 'General Topics Of Islam' started by IQBAL HASSAN, Nov 28, 2016.

  1. IQBAL HASSAN

    IQBAL HASSAN Super Moderators

    [​IMG]
    بہوکے ساتھ ساس اورخسرکا رویہ


    بیٹاہونے کی حیثیت سے آپ پروالدین کا حق ہے اور شوہرہونے کی حیثیت سے بیوی کا حق ہے، والدین اوربیوی ہر ایک کے حقوق ادا کرنا ضروری ہے، کسی ایک کے حق کی ادائیگی سے دوسرے کی حق تلفی شریعت میں روا نہیں ۔ لہٰذا آپ اپنی اہلیہ کو نصیحت کریں کہ ساس اور خسر کے ساتھ خوش اخلاقی سے پیش آئیں، تعلقات میں تلخی پیدا نہ ہونے دیں اوراپنے والدین سے عرض کریں کہ کسی کے ساتھ زیادتی نہیںہونی چاہئے، بہو کے ساتھ رفق و نرمی کا برتاؤ کیاجائے۔آپ کے والد کا گالیاں دینا اور رشتہ داروں سے قطع تعلق کرنا گناہ ہے ‘ لہذا اسکی اصلاح کرلینی چاہئے۔ اگر رویہ تبدیل کیا جائے اور دونوں جانب سے رفق ونرمی کے ساتھ برتاؤ کیا جائے توان شا ء اللہ تعالی آپ کے والدین اور بیوی کے درمیان تعلقات استوار ہوجائیں گے۔
    واللہ اعلم بالصواب
    سید ضیاء الدین عفی عنہ

    [​IMG]


     
  2. muzafar ali

    muzafar ali Legend

    Jazak Allah
     
  3. Ghulam Rasool

    Ghulam Rasool Super Moderators

    very nice sharing dear ..................................
     

Share This Page