1. السلام علیکم
    آئی ٹی استاد ڈاٹ کام وزٹ کرنے کا شکریہ۔ ہم آپکو خوش آمدید کہتے ہیں۔ فورم کے کسی بھی حصے کو استعمال میں لانے جیسے پوسٹنگ کرنے، کوئی تھریڈ دیکھنے یا لکھنے کسی بھی ممبر سے رابطہ کرنے کے لئے اور فورم کے دیگر آلات وغیرہ کا استعمال کرنے کے لئے آپکا رجسٹر ہونا ضروری ہے۔ رجسٹر ہونے کے لئے یہاں کلک کریں۔ رجسٹریشن حاصل کرنا بالکل آسان اور بالکل مفت ہے۔
  2. آئی ٹی استاد کے لیے ٹیم ممبرز کی ضرورت ہے خواہش مند ممبرز ایڈمن سے رابطہ کریں
    Dismiss Notice
  3. Dismiss Notice

Jhel Milati Palkaye Teri


آئی ٹی استاد کی ںئی ایپ ڈاونلوڈ کریں اور آئی ٹی استاد ٹیلی نار اور ذونگ نیٹ ورک پر فری استمال کریں

itustad

Discussion in 'Songs Lyrics' started by PakArt, Feb 15, 2017.

Songs Lyrics"/>Feb 15, 2017"/>

Share This Page

  1. PakArt
    Online

    PakArt ITUstad dmin Staff Member
    • 83/98



    میرے رشکِ قمر تو نے پہلی نظر، جب نظر سے ملائی مزہ آ گیا
    mere rashk-e-qamar tu ne pehli nazar, jab nazar se milaaii maza aa gaya
    O my envy of the moon, when your eyes first met mine, I was overjoyed

    برق سی گر گئی، کام ہی کر گئی، آگ ایسی لگائی مزہ آ گیا
    barq si gir gaii kaam hi kar gaii, aag aisi lagaaii maza aa gaya
    Lightning struck and destroyed me; you ignited such a fire that it made me ecstatic

    جام میں گھول کر حسن کی مستیاں، چاندنی مسکرائی مزہ آ گیا
    jaam mein ghol kar husn ki mastiyaan, chaandni muskuraaii maza aa gaya
    Mixing beauty’s mischief into my drink, the moonlight smiled – how enjoyable!

    چاند کے سائے میں اے میرے ساقیا، تو نے ایسی پلائی مزہ آ گیا
    chaand ke saaey mein ae mere saaqiya, tu ne aisi pilaaii maza aa gaya
    In the moon’s shadow, O my cup-bearer, you made me drink such a wine that I was ecstatic

    نشہ شیشے میں انگڑائی لینے لگا، بزمِ رنداں میں ساغر کھنکنے لگے
    nasha sheeshe mein angraaii lene laga, bazm-e-rindaan mein saaghar khanakne lage
    Intoxication spread through the bottle, and goblets clinked in the party of debauchees

    میکدے پہ برسنے لگیں مستیاں، جب گھٹا گھر کے چھائی مزہ آ گیا
    maikade pe barasne lagiin mastiyaan, jab ghata ghir ke chaaii maza aa gaya
    Mischief descended upon the tavern, and when storm clouds poured down, I was overjoyed

    بےحجبانہ وہ سامنے آ گئے، اور جوانی جوانی سے ٹکرا گئی
    behijaabana woh saamne aa gae, aur jawaani jawaani se takra gaii
    Unveiled, she came before me, and her youthful splendor collided with mine

    آنکھ اُن کی لڑی یوں میری آنکھ سے، دیکھ کر یہ لڑائی مزہ آ گیا
    aankh un ki lari yuun meri aankh se, dekh kar yeh laraaii maza aa gaya
    Her eyes clashed with mine in such a way that seeing this fight made me joyful

    آنکھ میں تھی حیاہ ہر ملاقات پر، سرخ عارض ہوئے وصل کی بات پر
    aankh mein thi hayaa har mulaaqaat par, surkh aariz hue wasl ki baat par
    Modesty was in her eyes every time we met; her cheeks blushed red when I spoke of our union

    اُس نے شرما کے میرے سوالات پہ، ایسے گردن جھکائی مزہ آ گیا
    us ne sharma ke mere sawaalaat pe, aise gardan jhukaaii maza aa gaya
    Embarrassed by my questions, she lowered her head in such a way that I was delighted

    شیخ صاحب کا ایمان مٹ ہی گیا، دیکھ کر حسنِ ساقی پگھل ہی گیا
    shaikh saahib ka eemaan mit hi gaya, dekh kar husn-e-saaqi pighal hi gaya
    The shaikh’s faith was obliterated; upon seeing the cup-bearer’s beauty, it melted away

    آج سے پہلے یہ کتنے مغرور تھے، لٹ گئی پارسائی مزہ آ گیا
    aaj se pehle ye kitne maghroor the, lut gaii paarsaaii maza aa gaya
    Before today, how proud he was; now his piety has been lost – how enjoyable!

    اے فناؔ شکر ہے آج بعدِ فنا، اُس نے رکھلی میرے پیار کی آبرو
    ae Fana shukar hai aaj baad-e-fana, us ne rakhli mere pyaar ki aabroo
    O Fana, today I am grateful that after my demise, she has maintained the honor of my love

    اپنے ہاتھوں سے اُس نے میری قبر پر، چادرِ گل چڑھائی مزہ آ گیا
    apne haathon se us ne meri qabar par, chaadar-e-gul charhaaii maza aa gaya
    With her own hands, she spread a sheet of flowers on my grave – how delightful!
     

Share This Page