1. السلام علیکم
    آئی ٹی استاد ڈاٹ کام وزٹ کرنے کا شکریہ۔ ہم آپکو خوش آمدید کہتے ہیں۔ فورم کے کسی بھی حصے کو استعمال میں لانے جیسے پوسٹنگ کرنے، کوئی تھریڈ دیکھنے یا لکھنے کسی بھی ممبر سے رابطہ کرنے کے لئے اور فورم کے دیگر آلات وغیرہ کا استعمال کرنے کے لئے آپکا رجسٹر ہونا ضروری ہے۔ رجسٹر ہونے کے لئے یہاں کلک کریں۔ رجسٹریشن حاصل کرنا بالکل آسان اور بالکل مفت ہے۔

حج کے فرائض

Discussion in 'Eid-ul-Azha & Hajj' started by IQBAL HASSAN, May 7, 2017.

  1. IQBAL HASSAN

    IQBAL HASSAN Super Moderators


    حج کے فرائض


    حج کے صرف دو فرض ہیں:
    (۱) ذی الحجہ کی نویں تاریخ کے زوال سے عیدالاضحی کی فجر تک سرزمین عرفہ کا وقوف کرنا۔ اور عرفہ میں ٹہرنے کی فرض مقدار ان دونوں وقتوں کے درمیان ذراسی دیر ٹہرنے سے بھی ادا ہوجاتی ہے۔ حوالہ
    عَنْ عَبْدِ الرَّحْمَنِ بْنِ يَعْمَرَ أَنَّ نَاسًا مِنْ أَهْلِ نَجْدٍ أَتَوْا رَسُولَ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ وَهُوَ بِعَرَفَةَ فَسَأَلُوهُ فَأَمَرَ مُنَادِيًا فَنَادَى الْحَجُّ عَرَفَةُ مَنْ جَاءَ لَيْلَةَ جَمْعٍ قَبْلَ طُلُوعِ الْفَجْرِ فَقَدْ أَدْرَكَ الْحَجَّ (ترمذي بَاب مَا جَاءَ فِيمَنْ أَدْرَكَ الْإِمَامَ بِجَمْعٍ فَقَدْ أَدْرَكَ الْحَجَّ ۸۱۴)
    (۲) وقوف عرفہ کے بعد کعبہ کے ارد گرد سات چکر لگانا اس طواف کو طواف زیارت اور طواف افاضہ بھی کہتے ہیں۔ حوالہ
    وَلْيَطَّوَّفُوا بِالْبَيْتِ الْعَتِيقِ (الحج:۲۹)عن أَبي سَلَمَةَ بْن عَبْدِ الرَّحْمَنِ أَنَّ عَائِشَةَ رَضِىَ اللَّهُ عَنْهَا قَالَتْ :حَجَجْنَا مَعَ رَسُولِ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم فَأَفَضْنَا يَوْمَ النَّحْرِ وَحَاضَتْ صَفِيَّةُ فَأَرَادَ رَسُولُ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم مِنْهَا مَا يُرِيدُ الرَّجُلُ مِنْ أَهْلِهِ فَقُلْتُ :يَا رَسُولَ اللَّهِ إِنَّهَا حَائِضٌ. فَقَالَ :« أَحَابِسَتِى هِىَ ». فَقَالُوا :يَا رَسُولَ اللَّهِ قَدْ أَفَاضَتْ يَوْمَ النَّحْرِ. قَالَ :« أَخْرِجُوهَا » (السنن الكبري للبيهقي باب التَّحَلُّلِ بِالطَّوَافِ إِذَا كَانَ قَدْ سَعَى عُقَيْبِ طَوَافِ الْقُدُومِ ۹۹۲۸) فدل على أن هذا الطواف لا بد منه، وأنه حابس لمن لم يأت به، ولأن الحج أحد النسكين، فكان الطواف ركناً كالعمرة (الفقه الاسلامي وادلته طواف الإفاضة أوالزيارة ۵۱۸/۳)

     

Share This Page