1. السلام علیکم
    آئی ٹی استاد ڈاٹ کام وزٹ کرنے کا شکریہ۔ ہم آپکو خوش آمدید کہتے ہیں۔ فورم کے کسی بھی حصے کو استعمال میں لانے جیسے پوسٹنگ کرنے، کوئی تھریڈ دیکھنے یا لکھنے کسی بھی ممبر سے رابطہ کرنے کے لئے اور فورم کے دیگر آلات وغیرہ کا استعمال کرنے کے لئے آپکا رجسٹر ہونا ضروری ہے۔ رجسٹر ہونے کے لئے یہاں کلک کریں۔ رجسٹریشن حاصل کرنا بالکل آسان اور بالکل مفت ہے۔
  2. آئی ٹی استاد کے لیے ٹیم ممبرز کی ضرورت ہے خواہش مند ممبرز ایڈمن سے رابطہ کریں
    Dismiss Notice
  3. Dismiss Notice

عبادات کی حکمت:


آئی ٹی استاد کی ںئی ایپ ڈاونلوڈ کریں اور آئی ٹی استاد ٹیلی نار اور ذونگ نیٹ ورک پر فری استمال کریں

itustad

Discussion in 'Ramadan Sharif' started by IQBAL HASSAN, May 20, 2017.

Ramadan Sharif"/>May 20, 2017"/>

Share This Page

  1. IQBAL HASSAN
    Offline

    IQBAL HASSAN Designer
    • 63/65

    عبادات کی حکمت:
    ●▬▬▬▬▬▬▬▬ஜ۩۞۩ஜ▬▬▬ ▬▬▬▬●

    اسلام میں جو اعمال اور عبادات فرض یاواجب کیے گئے ہیں ان میں بے انتہا حکمتیں پوشیدہ ہیں۔دراصل اﷲ تعالیٰ نے اپنے بندوں پر مخصوص توجہ فرماتے ہوئے اُن کے لیے وہی اصول و ضوابط مقرر فرمائے ہیں جو بندے کی دنیا وی اور اخروی کامیابی و سعادت کا ذریعہ بنے۔ اﷲ تعالیٰ کے دربار میں مقبول عبادت کا سب سے اہم اور بنیادی قاعدہ خلوصِ نیت ہے۔ اگر عبادت کا بنیادی محرک رضائے الٰہی نہ ہو تو اس عبادت کی نہ کوئی حیثیت ہے اور نہ ہی کوئی ثواب ۔ اﷲ کے رسولؐ فرماتے ہیں"کتنے ہی روزہ دار ہیں جنھیں ان کے روزے سے سوائے بھوک اور پیاس کے کچھ نہیں ملتا"۔دوسری اہم بات یہ کہ اسلام عبادت گزاروں کو نا قابل برداشت مشقت میں نہیں ڈالتا بلکہ عبادت میں آسان شرائط کے ساتھ رخصت بھی فراہم کرتا ہے۔ چنانچہ اگر کوئی بیمار ہے تو مخصوص دنوں میں روزہ سے رخصت کی آزادی ہے کہ جب اﷲ تعالیٰ اس کو صحت مند کردے تو اس کی تلافی کرے۔اگر تندرستی کی امید نہیں ہے تو فدیہ ادا کرے۔لیکن یہاں یہ بات بھی پیش نظر رہنی چاہیے کہ بلا عذر عبادات سے محرومی دراصل انسان کی ابدی محرومی کا سبب بنتی ہے اور یہی محرومی انسان کو دنیا و آخرت کے خساروں سے بھی دوچار کرے گی ۔آخری بات یہ کہ انسان کی انفرادی اور اجتماعی زندگی پر اُن تمام عبادات کے گہرے اثرات مرتب ہونے چاہیں جو وہ شب و روز انجام دیتا ہے۔ یہ فرائض محض عبادت برائے عبادت نہیں، بلکہ اُخروی فلاح کے ساتھ ساتھ دنیاوی کامیابی و کامرانی پر بھی اثر انداز ہوتی ہے۔ اسلام نے کوئی ایسا عمل فرض نہیں کیا جس کے نتائج انسان کی عملی زندگی میں ظاہر نہ ہوں۔ شریعت نے اگر کسی چیز کا حکم دیا ہے تو وہ سراسر خیر ہی ہے اور بندوں سے اس کا راست تعلق ہے اور اگر کسی عمل سے منع کیا ہے تو صرف اس لیے کہ وہ انسان اور انسانی معاشرہ کے لیے ضرر رساں ہے۔ ارشاد ربانی ہے:"(پس آج یہ رحمت ان لوگوں کا حصہ ہے) جو اس پیغمبرنبی امی صلی اﷲ علیہ وسلم کی پیروی اختیار کریں جس کا ذکر انھیں اپنے ہاں تورات اور انجیل میں لکھا ہوا ملتا ہے۔ وہ انھیں نیکی کا حکم دیتا ہے، بدی سے روکتا ہے، ان کے لیے پاک چیزیں حلال اور ناپاک چیزیں حرام کرتا ہے، اور ان پر سے وہ بوجھ اتارتا ہے جو ان پر لدے ہوئے تھے اور بندشیں کھولتا ہے، جن میں جکڑے ہوئے تھے" (اعراف:۷:۱۵۷)۔
    ●▬▬▬▬▬▬▬▬ஜ۩۞۩ஜ▬▬▬ ▬▬▬▬●


     
    PakArt likes this.
  2. PakArt
    Online

    PakArt ITUstad dmin Staff Member
    • 83/98

Share This Page