1. السلام علیکم
    آئی ٹی استاد ڈاٹ کام وزٹ کرنے کا شکریہ۔ ہم آپکو خوش آمدید کہتے ہیں۔ فورم کے کسی بھی حصے کو استعمال میں لانے جیسے پوسٹنگ کرنے، کوئی تھریڈ دیکھنے یا لکھنے کسی بھی ممبر سے رابطہ کرنے کے لئے اور فورم کے دیگر آلات وغیرہ کا استعمال کرنے کے لئے آپکا رجسٹر ہونا ضروری ہے۔ رجسٹر ہونے کے لئے یہاں کلک کریں۔ رجسٹریشن حاصل کرنا بالکل آسان اور بالکل مفت ہے۔

میں تو خود ان کے در کا گدا ہوں

Discussion in 'Hamd-o-Naat' started by PRINCE SHAAN, Feb 9, 2013.



  1. میں تو خود ان کے در کا گدا ہوں

    میں تو خود ان کے در کا گدا ہوں اپنے آقا کو میں نذر کیا دوں
    اب تو آنکھوں میں بھی کچھ نہیں ہے ورنہ قدموں میں آنکھیں بچھا دوں

    آنے والی ہے انکی سواری، پھول نعتوں کے گھر گھر سجا دوں
    میرے گھر میں اندھیرا بہت ہے اپنی پلکوں پہ شمعیں جلا دوں

    میری جھولی میں کچھ بھی نہیں ہے میرا سرمایہ ہے تو یہی ہے
    اپنی آنکھوں کی چاندی بہا دوں اپنے ماتھے کا سونا لٹا دوں

    میرے آنسو بہت قیمتی ہیں، ان سے وابستہ ہیں انکی یادیں
    ان کی منزل ہے خاکِ مدینہ یہ گوہر یوں ہی کیسے لوٹا دوں

    قافلے جا رہے ہیں مدینے اور حسرت سے میں تک رہا ہوں
    یا لپٹ جاؤں قدموں سے ان کے یا قضا کو میں اپنی صدا دوں

    میں فقط آپ کو جانتا ہوں اور اسی در کو پہچانتا ہوں
    اس اندھیرے میں کس کو پکاروں آپ فرمائیں کس کو صدا دوں؟

    میری بخشش کا ساماں یہی ہے اور دل کا بھی ارماں یہی ہے
    ایک دن انکی خدمت میں جاکر ان کی نعتیں انہی کو سنا دوں

    بے نگاہی پہ میری نہ جائیں دیدہ ور میرے نزدیک آئیں
    میں یہیں سے مدینہ دکھا دوں، دیکھنے کا سلیقہ بتا دوں

     
  2. Dr Trojan

    Dr Trojan Regular Member

    Nice Sharing...
     
  3. Masha Allah Very Nice Sharing
     
  4. Zabardast Sharing Hai​
     
  5. ماشاءاللہ
    بہت اچھی شئیرنگ کی ہے
    جزاک اللہ
     

Share This Page