1. السلام علیکم
    آئی ٹی استاد ڈاٹ کام وزٹ کرنے کا شکریہ۔ ہم آپکو خوش آمدید کہتے ہیں۔ فورم کے کسی بھی حصے کو استعمال میں لانے جیسے پوسٹنگ کرنے، کوئی تھریڈ دیکھنے یا لکھنے کسی بھی ممبر سے رابطہ کرنے کے لئے اور فورم کے دیگر آلات وغیرہ کا استعمال کرنے کے لئے آپکا رجسٹر ہونا ضروری ہے۔ رجسٹر ہونے کے لئے یہاں کلک کریں۔ رجسٹریشن حاصل کرنا بالکل آسان اور بالکل مفت ہے۔

سبحان اللہ !

Discussion in 'Hadess Mubarak' started by PRINCE SHAAN, Jul 21, 2013.

  1. بسم اللہ الرحمٰن الرحیم
    السلامُ علیکم و رحمۃ اللہ و برکاتہ
    [font=arial, helvetica, sans-serif]
    [font=arial, helvetica, sans-serif]جب حضرت آدم علیہ السلام کو خداوند ِ قدوس نے[/font] بہشت میں رہنے کا حکم دیا
    تو آپ جنت میں تنہائی کی وجہ سے کچھ ملول ہوئے تو اللہ تعالیٰ نے آپ پر نیند کا غلبہ فرمایا اور آپ گہری نیند سو گئے تو نیند ہی کی حالت میں آپ کی بائیں پسلی سے اللہ تعالیٰ نے
    [font=arial, helvetica, sans-serif]
    [/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif] حضرت حواء رضی اللہ تعالیٰ عنہا کو پیدا فرمادیا۔[/font]​
    [font=arial, helvetica, sans-serif]جب آپ نیند سے بیدار ہوئے تو یہ دیکھ کر حیران رہ گئے[/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif] کہ ایک نہایت ہی خوبصورت اور حسین و جمیل عورت آپ کے پاس بیٹھی ہوئی ہے۔[/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif] آپ نے ان سے فرمایا کہ تم کون ہو؟ اور کس لئے یہاں آئی ہو؟[/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif] تو حضرت حواء رضی اللہ تعالیٰ عنہا نے جواب دیا کہ میں آپ کی بیوی ہوں اور اللہ تعالیٰ نے مجھے اس لئے پیدا فرمایا ہے تاکہ آپ کو مجھ سے اُنس اور سکون قلب حاصل ہو۔[/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif] اور مجھے آپ سے اُنسیت اور تسکین ملے اور ہم دونوں ایک دوسرے سے مل کر خوش رہیں اور پیار و محبت کے ساتھ زندگی بسر کریں اور خداوند ِ قدوس عزوجل کی نعمتوں کا شکر ادا کرتے رہیں۔[/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif] (تفسیر روح المعانی، ج۱، ص ۳۱۶،پ۱، البقرۃ :۳۵)[/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif] [/font]قرآن مجید میں چند مقامات پر اللہ تعالیٰ نے حضرت حواء کے بارے میں ارشاد فرمایا ، مثلاً!
    [font=arial, helvetica, sans-serif][/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif]وَّخَلَقَ مِنْہَا زَوْجَہَا وَبَثَّ مِنْہُمَا رِجَالًا کَثِیۡرًا وَّنِسَآءً ۚ[/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif](پ4،النساء :1)[/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif][/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif]ترجمہ کنزالایمان :۔[/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif] اور اسی میں سے اس کا جوڑا بنایا اور ان[/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif] دونوں سے بہت مرد و عورت پھیلا دیئے۔[/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif]درسِ ہدایت:۔[/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif]حضرت آدم و حواء علیہما السلام کی تخلیق کا[/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif] واقعہ مضامین قرآن مجید کے ان عجائبات میں[/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif] سے ہے جس کے دامن میں بڑی بڑی عبرتوں[/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif] اور نصیحتوں کے گوہر آبدار کے انبار پوشیدہ[/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif] ہیں جن میں سے چند یہ ہیں۔[/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif]
    [/font]

    [font=arial, helvetica, sans-serif]اللہ تعالیٰ نے حضرت آدم علیہ السلام کو مٹی سے[/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif] بنایا اور حضرت حواء رضی اللہ تعالیٰ عنہا کو[/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif] حضرت آدم علیہ السلام کی پسلی سے پید فرمایا۔[/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif]
    [/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif] قرآن کے اس فرمان سے یہ حقیقت عیاں ہوتی[/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif] ہے کہ خلاّق عالم جل جلالہ نے انسانوں کو چار[/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif] طریقوں سے پیدا فرمایا ہے:[/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif]
    [/font]

    [font=arial, helvetica, sans-serif](اول) یہ کہ مرد و عورت دونوں کے ملاپ سے[/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif] ،جیسا کہ عام طور پر انسانوں کی پیدائش ہوتی[/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif] ہے۔ چنانچہ قرآن مجید میں صاف صاف اعلان ہے کہ[/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif][/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif]اِنَّا خَلَقْنَا الْاِنۡسَانَ مِنۡ نُّطْفَۃٍ اَمْشَاجٍ ٭ۖ [/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif](پ29،الدھر : 2)[/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif] [/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif]ترجمہ کنزالایمان :۔ بےشک ہم نے آدمی کو پیدا[/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif] کیا ملی ہوئی منی سے[/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif](دوم) یہ کہ تنہا مرد سے ایک انسان پیدا ہو۔[/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif] اور وہ حضرت حواء رضی اللہ تعالیٰ عنہا ہیں[/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif] کہ اللہ تعالیٰ نے ان کو حضرت آدم علیہ السلام[/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif] کی بائیں پسلی سے پیدا فرمادیا۔[/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif]
    [/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif](سوم) یہ کہ تنہا ایک عورت سے ایک انسان پیدا[/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif] ہو۔ اور وہ حضرت عیسیٰ علیہ السلام ہیں جو کہ[/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif] پاک دامن کنواری بی بی مریم علیہا السلام کے[/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif] شکم سے بغیر باپ کے پیدا ہوئے۔[/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif]
    [/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif](چہارم) یہ کہ بغیر مرد و عورت کے بھی ایک[/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif] انسان کو خداوند ِ قدوس عزوجل نے پیدا فرما دیا[/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif] اور وہ انسان حضرت آدم علیہ السلام ہیں کہ اللہ[/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif] تعالیٰ نے ان کو مٹی سے بنا دیا۔[/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif]ان واقعات سے مندرجہ ذیل اسباق کی طرف[/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif] راہنمائی ہوتی ہے۔[/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif]
    [/font]

    [font=arial, helvetica, sans-serif](۱) خداوند ِ قدوس ایسا قادر و قیوم اور خلاّق[/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif] ہے کہ انسانوں کو کسی خاص ایک ہی طریقے[/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif] سے پیدا فرمانے کا پابند نہیں ہے، بلکہ وہ ایسی[/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif] عظیم قدرت والا ہے کہ وہ جس طرح چاہے[/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif] انسانوں کو پیدا فرما دے۔ چنانچہ مذکورہ بالا[/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif] چار طریقوں سے اس نے انسانوں کو پیدا[/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif] فرمادیا۔ جو اس کی [/font]قدرت و حکمت اور اس کی عظیم الشان خلاّقیت کا نشانِ اعظم ہے۔

    [font=arial, helvetica, sans-serif]سبحان اللہ![/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif] خداوند ِ قدوس کی شانِ خالقیت کی عظمت کا کیا[/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif] کہنا ؟[/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif] جس خلّاقِ عالم نے کرسی و عرش اور لوح و[/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif] قلم اور زمین و آسمان کو ''کُن'' فرما کر موجود[/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif] فرما دیا اس کی قدرتِ کاملہ اور حکمتِ بالغہ[/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif] کے حضور خلقتِ انسانی کی بھلا حقیقت و[/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif] حیثیت ہی کیا ہے۔ لیکن اس میں کوئی شک نہیں[/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif] کہ تخلیق انسان اس قادر مطلق کا وہ تخلیقی[/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif] شاہکار ہے کہ کائنات عالم میں اس کی کوئی[/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif] مثال نہیں۔[/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif] کیونکہ وجود انسان عالم خلق کی تمام[/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif] مخلوقات کے نمونوں کا ایک جامع مرقع ہے۔[/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif] اللہ[/font] اکبر!
    کیا خوب ارشاد فرمایا۔
    مولائے کائنات
    [font=arial, helvetica, sans-serif] حضرت علی مرتضیٰ رضی اللہ عنہ نے کہ ؎[/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif] [/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif]اَتَحْسِبُ اِنَّکَ جِرْمٌ صَغِیْرٌ وَفِیْکَ اِنْطَوَی الْعَالَمُ الْاَکْبَرُ[/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif][/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif]ترجمہ :۔ [/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif] اے انسان! [/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif]کیا تو یہ گمان کرتا ہے کہ تو ایک چھوٹا سا جسم[/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif] ہے؟ حالانکہ تیری عظمت کا یہ حال ہے کہ[/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif] تیرے اندر عالم اکبر سمٹا ہوا ہے۔[/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif]
    [/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif](۲) ممکن تھا کہ کوئی مرد یہ خیال کرتا کہ اگر[/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif] ہم مردوں کی جماعت نہ ہوتی تو تنہا عورتوں[/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif] سے کوئی انسان پیدا نہیں ہو سکتا تھا۔[/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif] اسی طرح[/font] ممکن تھا کہ عورتوں کو یہ گمان ہوتا کہ اگر ہم عورتیں نہ ہوتیں تو تنہا مردوں سے کوئی انسان پیدا نہ ہوتا۔
    اسی طرح ممکن تھا کہ عورت و مرد دونوں مل کر یہ ناز کرتے کہ اگر ہم مردوں اور عورتوں کا وجود نہ ہوتا تو کوئی انسان پیدا نہیں ہوسکتا تھا،
    تو اللہ تعالیٰ نے چاروں طریقوں
    [font=arial, helvetica, sans-serif] سے انسانوں کو پیدا فرما کر عورتوں اور[/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif] مردوں دونوں کا منہ بند کردیا کہ دیکھ لو،[/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif]ہم ایسے قادر و قیوم ہیں کہ حضرت حواء علیہا[/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif] السلام کو تنہا مرد یعنی حضرت آدم علیہ السلام[/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif] کی پسلی سے پیدا فرما دیا۔[/font] لہٰذا
    اے عورتو!
    [font=arial, helvetica, sans-serif] تم یہ گمان مت رکھو کہ اگر عورتیں نہ ہوتیں تو[/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif] کوئی انسان پیدا نہ ہوتا۔[/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif] اسی طرح حضرت عیسیٰ علیہ السلام کو تنہا[/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif] عورت کے شکم سے بغیر مرد کے پیدا [/font]فرما کر مردوں کو تنبیہ فرما دی کہ
    اے مردو!
    تم یہ ناز نہ کرو کہ اگر تم نہ ہوتے تو انسانوں کی پیدائش نہیں ہو سکتی تھی۔
    دیکھ لو!
    ہم نے حضرت عیسیٰ علیہ السلام کو تنہا عورت کے شکم سے بغیر مرد کے پیدا فرمادیا۔
    اور حضرت آدم علیہ السلام کو بغیر مرد و عورت کے مٹی سے پیدا فرما کر عورتوں اور مردوں کا منہ بند فرمادیا کہ
    اے عورتو! اور مردو!
    تم کبھی بھی اپنے دل میں خیال نہ لانا کہ اگر ہم دونوں نہ ہوتے تو انسانوں کی جماعت پیدا نہیں ہو سکتی تھی۔
    دیکھ لو!
    حضرت آدم علیہ السلام کے نہ باپ ہیں نہ ماں، بلکہ ہم نے ان کو مٹی سے پیدا فرمادیا۔


    سبحان اللہ !
    سچ فرمایا اللہ جل جلالہ نے کہ
    [font=arial, helvetica, sans-serif][/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif]اللہُ خَالِقُ کُلِّ شَیۡءٍ وَّہُوَ الْوَاحِدُ الْقَہَّارُ[/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif] ﴿16﴾ (پ 13،الرعد:16)[/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif][/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif]ترجمہ کنزالایمان :۔ [/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif] اللہ ہر چیز کا بنا نے والا ہے اور وہ اکیلا سب[/font]
    [font=arial, helvetica, sans-serif] پر غالب ہے [/font]وہ جس کو چاہے اور جیسے چاہے اور جب چاہے پیدا فرما دیتا ہے۔
    اس کے افعال اور اس کی قدرت کسی اسباب و علل، اور کسی خاص طور طریقوں کی بندشوں کے محتاج نہیں ہیں۔
    وہ ہے۔ فَعَّالٌ لِّمَا یُرِیْدُ
    یعنی وہ جو چاہتا ہے کرتا ہے
    (پ۳۰،البروج:۱۶)۔اس کی شان
    [font=arial, helvetica, sans-serif]یَفْعَلُ اللہُ مَا یَشَاءُ وَیَفْعَلُ اللہُ مَا یُرِیْد ہے۔[/font]​
    [font=arial, helvetica, sans-serif] یعنی جس چیز اور جس کام کا وہ ارادہ فرماتا ہے اسکو کرڈالتا ہے۔[/font]​
    [font=arial, helvetica, sans-serif] نہ کوئی اسکی مشیت وارادہ میں دخل انداز ہو سکتا ہے،[/font]​
    [font=arial, helvetica, sans-serif] نہ کسی کو اسکے کسی کام میں چون و چرا کی مجال ہو سکتی ہے۔[/font]​
    [font=arial, helvetica, sans-serif] واللہ تعالٰی اعلم۔[/font]

    --~---
    سُبْحَانَكَ اَللَّهُمَّ وَبِحَمْدِكَ أَشْهَدُ أَنْ لَّاإِلهَ إِلَّا أَنْتَ أَسْتَغْفِرُكَ وَ أَتُوبُ إِلَيْكَ
    تو پاک ہے اے اللہ اور میں تیری حمد کرتا ہوں، میں گواہی دیتا ہوں کہ تیرے سوا کوئی معبود نہیں میں تجھ سے بخشش چاہتا اور تیری طرف توبہ کرتا ہوں۔
    ---~---
    اَللّٰهُمَّ إِنِّیْ أَعُوْذُ بِكَ مِنْ عَذَابِ الْقَبْرِ، وَأَعُوْذُ بِكَ مِنْ عَذَابِ جَھَنَّمَ، وَأَعُوْذُ بِكَ مِنْ فِتْنَةِ الْمَسِيْحِ الدَّجَّالِ، وَأَعُوْذُ بِكَ مِنْ فِتْنَةِ المَحْيَا وَفِتْنَةِ الْمَمَاتِ، اَللّٰهُمَّ إِنِّیْ أَعُوْذُبِكَ مِنَ الْمَأْثَمِ وَالْمَغْرَمِ
    اے اللہ ، میں عذاب قبر سے تیری پناہ چاہتا ہوں اور میں جہنم کے عذاب سے تیری پناہ چاہتا ہوں اور میں دجال مسیح کے فتنے سے تیری پناہ چاہتا ہوں۔اور میں زندگی اور موت کی آزمائشوں سے تیری پنا ہ چاہتا ہوں۔اے اللہ ، میں گناہ اور قرض سے تیری پنا ہ چاہتا ہوں۔
    [font=arial, helvetica, sans-serif]
    اللہ ہم سب کو ہدایت عطا فرمائیں
    [/font]​
    [font=arial, helvetica, sans-serif]یااللہ ہم پر رحم فرما
    آمین
    [/font]​
    [/font]
     
  2. Net KiNG

    Net KiNG VIP Member

    Subhan Allah Nice Sharing
     
  3. Ali

    Ali ITU Lover

    jazakaAllah

    Sukriaaa
     

Share This Page