1. السلام علیکم
    آئی ٹی استاد ڈاٹ کام وزٹ کرنے کا شکریہ۔ ہم آپکو خوش آمدید کہتے ہیں۔ فورم کے کسی بھی حصے کو استعمال میں لانے جیسے پوسٹنگ کرنے، کوئی تھریڈ دیکھنے یا لکھنے کسی بھی ممبر سے رابطہ کرنے کے لئے اور فورم کے دیگر آلات وغیرہ کا استعمال کرنے کے لئے آپکا رجسٹر ہونا ضروری ہے۔ رجسٹر ہونے کے لئے یہاں کلک کریں۔ رجسٹریشن حاصل کرنا بالکل آسان اور بالکل مفت ہے۔

Aaj To Besabab Udas Hai Jee

Discussion in 'Roman Urdu Poetry' started by UmerAmer, Oct 5, 2013.

  1. UmerAmer

    UmerAmer VIP Member

    Aaj to besabab udaas hai jee,
    Ishq hotaa to koi baat bhi thi.

    Jalta phirta hon kyun do-pahron men,
    Jaany kya cheez kho gai meri.

    Wahin phirta hon main bhi khaak basar,
    Is bhary shahar men hai ek gali.

    Chupta phirta hai ishq dunya se,
    Phelti ja rahi hai rusvai.

    Hamnashen kya kahon ke woh kya hai,
    Chhorr ye baat neend urrane lagi.

    Aaj to woh bhi kuch khamosh saa tha,
    Main ne bhi us se koi baat na ki.

    Tu jo itna udas hai 'Nasir'
    Tujhe kyaa ho gaya bata to sahi.
     
  2. Bohat khoob.........Undah sharing
     
  3. Wah ji wah.
    . . . . . . .
     

Share This Page