1. السلام علیکم
    آئی ٹی استاد ڈاٹ کام وزٹ کرنے کا شکریہ۔ ہم آپکو خوش آمدید کہتے ہیں۔ فورم کے کسی بھی حصے کو استعمال میں لانے جیسے پوسٹنگ کرنے، کوئی تھریڈ دیکھنے یا لکھنے کسی بھی ممبر سے رابطہ کرنے کے لئے اور فورم کے دیگر آلات وغیرہ کا استعمال کرنے کے لئے آپکا رجسٹر ہونا ضروری ہے۔ رجسٹر ہونے کے لئے یہاں کلک کریں۔ رجسٹریشن حاصل کرنا بالکل آسان اور بالکل مفت ہے۔

دیمک زدہ محبت

Discussion in 'Urdu Iqtebaas' started by PRINCE SHAAN, Oct 12, 2013.

  1. دیمک زدہ محبت

    تم مجھ سے خفا ہو؟‘‘ وہ خاموش رہی۔
    ’’مجھے کیا ضرورت ہے ناراض ہونے کی۔‘‘ وہ آج کافی دن بعد بڑی فراغت کے ساتھ پورچ میں رکھے پودوں کو پانی ڈال رہی تھی۔
    ’’رامس کے پروپوزل پر حیران ہونے والی کیا بات تھی؟‘‘ ماہم نے تجاہل عارفانہ کا خوب مظاہرہ کیا۔ عائشہ نے گھور کر اسے دیکھا۔
    ‘‘مجھے حیرانی رامس کے پروپوزل پر نہیں، تمھارے تین دن بعد بتانے پر ہو رہی ہے۔‘‘ عائشہ نے ایک ایک لفظ پر زور دے کر اسے کچھ باور کروانے کی کوشش کی۔
    ’’تم انسانوں کیطرح بیٹھ کر بات نہیں کر سکتیں۔‘‘ ماہم نے اسکے ہاتھ سے زبردستی پائپ پکڑ کر آسڑیلین گھاس پر پھینکا۔
    ’’پہلے تم انسانوں کو انسان سمجھنا تو سیکھ لو، پھر رویوں کی بات کرنا۔‘‘ عائشہ نے تیزی سے کہا اور ناراضی کا اظہار کرنے کے لئے کوسموس کے پودے کو دیکھنے لگی۔
    ’’تم نے کوسموس کے پودے پر ریسرچ پیپر لکھنا ہے جو مسلسل ان پر نظریں جمائے کھڑی ہو۔‘‘ماہم چڑ کر بولی۔
    ’’کم از کم ان پھولوں کے رنگ اصلی تو ہیں، دھوکا تو نہیں دیتے۔‘‘ عائشہ نے سنجیدگی سے کہا تو ماہم کچھ دیر کے لئے چپ سی ہوگئی۔

    (صائمہ اکرم چوہدری کے ناول ’’دیمک زدہ محبت‘‘ سے اقتباس)​


     
  2. IQBAL

    IQBAL Guru Member

    VERY NICE SHARING
    [​IMG]
     
  3. Net KiNG

    Net KiNG VIP Member


    السلام علیکم ورحمتہ اللہ و برکاتہ

    آپ نے بہت اچھی شئیرنگ کی ہے .

    کیپ اٹ اپ جزاک اللہ

    مزید شئیرنگ کا انتظار رہے گا

    اچھی اور عمدہ شیئرنگ کا شکریہ
    [​IMG]
    [​IMG]

     

Share This Page