1. السلام علیکم
    آئی ٹی استاد ڈاٹ کام وزٹ کرنے کا شکریہ۔ ہم آپکو خوش آمدید کہتے ہیں۔ فورم کے کسی بھی حصے کو استعمال میں لانے جیسے پوسٹنگ کرنے، کوئی تھریڈ دیکھنے یا لکھنے کسی بھی ممبر سے رابطہ کرنے کے لئے اور فورم کے دیگر آلات وغیرہ کا استعمال کرنے کے لئے آپکا رجسٹر ہونا ضروری ہے۔ رجسٹر ہونے کے لئے یہاں کلک کریں۔ رجسٹریشن حاصل کرنا بالکل آسان اور بالکل مفت ہے۔

Dheeray Se Sarakti Hai Raat Us Ke Aanchal Ki Tarah

Discussion in 'Roman Urdu Poetry' started by Mohammad Sajjad, Nov 28, 2013.

  1. Dheeray Se Sarakti Hai Raat Us Ke Aanchal Ki Tarah
    Uska Chehra Nazar Aata Hai Jheel Main Kanwal Ki Tarah
    Baad Muddat Usko Daikha To Jism-o-Jaan Ko Yun Laga
    Pyasi Zameen Pe Jaisay Koi Baras Gaya Baadal Ki Tarah
    Roz Kehta Hai Seenay Pe Sar Rakh K Raat Bhar Jaga’uon Ga,
    Sar-e-Sham Hee Mujhe Aaj Phir Sula Gaya Wo Kal Ki Tarah,
    Mere Hee Dil Ka Makee.n Nikla Wo Shakhs “Wasi”
    Aur Mein Shehar Bhar Me Dhundta Raha Usy Kisi Pagal Ki Tarah
     
  2. UmerAmer

    UmerAmer VIP Member

    bohat umda sharing
     

Share This Page