1. السلام علیکم
    آئی ٹی استاد ڈاٹ کام وزٹ کرنے کا شکریہ۔ ہم آپکو خوش آمدید کہتے ہیں۔ فورم کے کسی بھی حصے کو استعمال میں لانے جیسے پوسٹنگ کرنے، کوئی تھریڈ دیکھنے یا لکھنے کسی بھی ممبر سے رابطہ کرنے کے لئے اور فورم کے دیگر آلات وغیرہ کا استعمال کرنے کے لئے آپکا رجسٹر ہونا ضروری ہے۔ رجسٹر ہونے کے لئے یہاں کلک کریں۔ رجسٹریشن حاصل کرنا بالکل آسان اور بالکل مفت ہے۔

عورت

Discussion in 'Urdu Iqtebaas' started by INNOCENT BOY, Feb 24, 2013.


  1. کوئی میری ساری زندگی کے تجربوں کا نچوڑ مانگے تو میں کہوں گا کبھی کسی عورت کو اس کی رضا کےبغیر مت اپنانا اور اپنا لو تو کبھی اس سے محبت کی خواہش مت کرنا۔۔۔میں نے عورت کو ہمیشہ بہت کمزور سمجھا تھا۔۔
    موم کی گڑیا کی طرح۔۔۔لیکن ایک عمر برتنے کے بعد میں نے یہ جانا ہے کہ عورت موم ہے یا پتھر۔۔۔اس کا فیصلہ وہ خودکرتی ہے۔۔۔کسی دوسرے شخص کو اسے موم یا پتھر کا خطاب دینے کا حق نہیں ہوتا۔۔۔وہ خود چاہے تو محبوب کے اشاروں کی سمت مڑتی رہتی ہے۔۔۔اور پتھر بننے کا فیصلہ کر لے تو کوئی شخص بھکاری بن کر بھی اس کی ایک نگاہِ التفات نہیں پا سکتا۔۔۔اپنی ہستی تمھارے نام لکھ کر بھی میرا دل ایک کشکول کی طرح خالی ہے ۔
    یہ وہ کشکول ہے جو ہمدردی،مروت ، اور جبر کے تحت دئیے گئے تمام سکے نیچے گرا دیتا ہے۔۔۔جیسے کسی اندھے فقیر کو خود بہ خود خبر ہو جائے کہ اسے دیا جانے والا سکہ کھوٹا ہے ۔۔۔یہ کشکول محض محبت سے بنا سکہ مانگتا ہے ،سو اب تک خالی ہے۔

    ماہا ملک کے ناول " جو چلے تو جاں سے گزر گئے " سے اقتباس

     
  2. Great sharing.................;)
     
  3. Nice Sharing....

     

Share This Page