1. السلام علیکم
    آئی ٹی استاد ڈاٹ کام وزٹ کرنے کا شکریہ۔ ہم آپکو خوش آمدید کہتے ہیں۔ فورم کے کسی بھی حصے کو استعمال میں لانے جیسے پوسٹنگ کرنے، کوئی تھریڈ دیکھنے یا لکھنے کسی بھی ممبر سے رابطہ کرنے کے لئے اور فورم کے دیگر آلات وغیرہ کا استعمال کرنے کے لئے آپکا رجسٹر ہونا ضروری ہے۔ رجسٹر ہونے کے لئے یہاں کلک کریں۔ رجسٹریشن حاصل کرنا بالکل آسان اور بالکل مفت ہے۔

مفلسی کے دور میں

Discussion in 'Funny Poetry' started by PRINCE SHAAN, Feb 27, 2013.

  1. PRINCE SHAAN

    PRINCE SHAAN Guest


    [​IMG]

    مفلسی کے دور میں

    مفلسی کے دور میں اک گھر کا جو کھایا نمک
    عمر اس در پر گزاری، اس قدر بھایا نمک

    "باس کی بیٹی" سے شادی کے لئے مجبور تھا
    لے گیا آغوشِ الفت میں مجھے کالا نمک

    میرے آنے کی خوشی میں وہ تو پاگل ہو گئی
    ڈال دی سالن میں چینی، کھیر میں ڈالا نمک

    لنچ کا وعدہ تھا مجھ سے، لے گیا اس کو کزن
    اس طرح ظالم نے زخموں پر مرے چھڑکا نمک

    سالیوں نے سامنے رکھ دی تھی "مصری" کی پلیٹ
    شرم کے مارے وہ دلہا کھا گیا سارا نمک

    اس کو دے دے کر صدائیں میرا گلہ دُکھ گیا
    اور غراروں کے لئے اس نے فقط پھینکا نمک

    ہے فشارِ خون بڑھنے کا سبب بیگم میری
    اس لئے بیگم کا میں نے نام ہے رکھا نمک

    بیگم اور معشوق میں نمکین سا اک فرق ہے
    اک طرف پھانکا نمک ہو، اک طرف چکھا نمک

    عاشقوں کو قدر اس کی آ گئی پھینٹی کے بعد
    جب ٹکوروں کے لئے زخموں پہ تھا رکھا نمک
     
  2. Ali

    Ali ITU Lover

    hmmmmm :p very nice
     
  3. INNOCENT BOY

    INNOCENT BOY Champ

    Hahahaha....nice sharing
     
  4. PRINCE SHAAN

    PRINCE SHAAN Guest

  5. Hahhaha Gr8 One ​
     
  6. Zulfiqar Ali

    Zulfiqar Ali Guest

    hahahahaha
    Nice Sharing....
     
  7. loxy......................:p
     

Share This Page