1. السلام علیکم
    آئی ٹی استاد ڈاٹ کام وزٹ کرنے کا شکریہ۔ ہم آپکو خوش آمدید کہتے ہیں۔ فورم کے کسی بھی حصے کو استعمال میں لانے جیسے پوسٹنگ کرنے، کوئی تھریڈ دیکھنے یا لکھنے کسی بھی ممبر سے رابطہ کرنے کے لئے اور فورم کے دیگر آلات وغیرہ کا استعمال کرنے کے لئے آپکا رجسٹر ہونا ضروری ہے۔ رجسٹر ہونے کے لئے یہاں کلک کریں۔ رجسٹریشن حاصل کرنا بالکل آسان اور بالکل مفت ہے۔

Kuch to aye yaar ilaj gham-e-tanhai ho......

Discussion in 'Roman Urdu Poetry' started by !__KuMar__!, Feb 11, 2014.

  1. !__KuMar__!

    !__KuMar__! Well Wishir

    Kuch to aye yaar ilaj gham-e-tanhai ho
    bat itni b na bhar jaiye k ruswai ho,

    jisne b muj ko tamasha sa bana rakha hai
    ab zaroori hai wohi aankh tamashai ho,

    dubny waly to ankhon sy b kab nikley hein
    dubny k liye lazmi nahi gehrai ho,

    main tuje jeet b tohfy mein nahi de sakta
    chahta ye b nahi hon teri paspai ho,

    koi anjaan na ho shehr-e-muhabbat ka lekin
    kash her dil ki her ek dil se snashai ho,

    yun guzr jata hai "S" tere kuchey se woh
    tera waqif na ho jaise koi harjai ho.....
     
  2. Net KiNG

    Net KiNG VIP Member

    نائیس شئیرنگ
     
  3. Mohammad Sajjad

    Mohammad Sajjad Senior Member

    very NIce Sharing.
     

Share This Page