1. السلام علیکم
    آئی ٹی استاد ڈاٹ کام وزٹ کرنے کا شکریہ۔ ہم آپکو خوش آمدید کہتے ہیں۔ فورم کے کسی بھی حصے کو استعمال میں لانے جیسے پوسٹنگ کرنے، کوئی تھریڈ دیکھنے یا لکھنے کسی بھی ممبر سے رابطہ کرنے کے لئے اور فورم کے دیگر آلات وغیرہ کا استعمال کرنے کے لئے آپکا رجسٹر ہونا ضروری ہے۔ رجسٹر ہونے کے لئے یہاں کلک کریں۔ رجسٹریشن حاصل کرنا بالکل آسان اور بالکل مفت ہے۔
  2. آئی ٹی استاد کے لیے ٹیم ممبرز کی ضرورت ہے خواہش مند ممبرز ایڈمن سے رابطہ کریں
    Dismiss Notice
  3. Dismiss Notice

3D Maps Banay WaLa Mobile


آئی ٹی استاد کی ںئی ایپ ڈاونلوڈ کریں اور آئی ٹی استاد ٹیلی نار اور ذونگ نیٹ ورک پر فری استمال کریں

itustad

Discussion in 'IT News' started by Net KiNG, Feb 22, 2014.

IT News"/>Feb 22, 2014"/>

Share This Page

  1. Net KiNG
    Offline

    Net KiNG VIP Member
    • 38/49

    گوگل نے ایک ایسا سمارٹ فون متعارف کرایا ہے جس میں مخصوص قسم کے سافٹ ویئر اور ہارڈویئر نصب ہیں جو صارفین کے اردگرد کے ماحول کے تھری ڈی نقشے تیار کر سکتے ہیں۔

    فون کے سنسرز ایک سیکنڈ میں ڈھائی لاکھ تھری ڈی پیمائشیں کر کے اپنی پوزیش کو بروقت اپ ڈیٹ کر سکتا ہے۔

    [​IMG]
     
  2. Net KiNG
    Offline

    Net KiNG VIP Member
    • 38/49

    گوگل کا کہنا ہے کہ کمزور نظر کے افراد اس ٹیکنالوجی سے نامانوس عمارتوں کے اندر چلنے پھرنے میں مدد لے سکتے ہیں۔

    گوگل نے اس سمارٹ فون کے 200 نمونے ڈیویلپرز کو دیے ہیں تاکہ وہ اس کے لیے ایپس بنا سکیں۔

    کمپنی کا کہنا ہے کہ اس نے یہ ٹیکنالوجی مختلف اداروں میں ماہرین کی مدد سے اپنے پراجیکٹ ’ٹینگو‘ کے تحت تیار کی ہے۔

    ’ہم مادی وجود رکھتے ہیں اور تھری ڈی دنیا میں رہتے ہیں۔ لیکن مسئلہ یہ ہے کہ آپ کا موبائل فرض کر لیتا ہے کہ مادی دنیا سکرین کے کنارے پر ہی ختم ہو جاتی ہے۔‘
     
  3. Net KiNG
    Offline

    Net KiNG VIP Member
    • 38/49

    کمپنی نے مزید کہا کہ ’ٹینگو پراجیکٹ کا مقصد یہ ہے کہ جگہ اور حرکت کے حوالے سے انسانی سمجھ بوجھ کو موبائل سیٹ میں سمو دیا جائے۔‘

    جنوری میں گوگل نے دعویٰ کیا تھا کہ وہ ایک ایسے ’سمارٹ کانٹیکٹ لینز‘ پر کام کر رہے ہیں جو آنسوؤں سے کسی فرد کے جسم میں گلوکوز کی مقدار کی پیمائش کر سکے گا۔

    ماہرین کا کہنا ہے کہ کمپنیاں ایسی ٹیکنالوجی پر کام کر رہی ہیں جسے روز مرہ کے استعمال میں لایا جا سکے جس کا مقصد زیادہ سے زیادہ صارفین کو متوجہ کرنا ہے۔

    آئی ڈی سی تحقیقاتی کمپنی کے نائب صدر برائن ما نے بی بی سی کو بتایا کہ ’صرف ہارڈویئر یا آلے پر توجہ نہیں ہے بلکہ دیکھنا یہ ہے کہ یہ آلات حقیقت میں کیا کر سکتے ہیں۔‘

    انھوں نے کہا کہ ’یہ سب کچھ اس ٹیکنالوجی کے استعمال کو ایک قدم اور آگے لے جانا ہے جس کے تحت حقیقت کو ازسرِ نو تخلیق کیا جا سکتا ہے، چاہے اس کا استعمال صحت کے شعبے میں، یا نقشے تیار کرنے کے میدان میں۔‘
     
  4. master mind2
    Offline

    master mind2 Regular Member
    • 16/16

    Nice thread
     
  5. Ali baba
    Offline

    Ali baba Well Wishir
    • 16/16

    بھت عمدہ شیئرنگ ہمارے ساتھ شیئر کرنے کا شکریہ
     

Share This Page