1. السلام علیکم
    آئی ٹی استاد ڈاٹ کام وزٹ کرنے کا شکریہ۔ ہم آپکو خوش آمدید کہتے ہیں۔ فورم کے کسی بھی حصے کو استعمال میں لانے جیسے پوسٹنگ کرنے، کوئی تھریڈ دیکھنے یا لکھنے کسی بھی ممبر سے رابطہ کرنے کے لئے اور فورم کے دیگر آلات وغیرہ کا استعمال کرنے کے لئے آپکا رجسٹر ہونا ضروری ہے۔ رجسٹر ہونے کے لئے یہاں کلک کریں۔ رجسٹریشن حاصل کرنا بالکل آسان اور بالکل مفت ہے۔
  2. آئی ٹی استاد کے لیے ٹیم ممبرز کی ضرورت ہے خواہش مند ممبرز ایڈمن سے رابطہ کریں
    Dismiss Notice
  3. Dismiss Notice

"ﺣﺎﻓﻆ ﻋﺎﺭﻑ ﺍﻟﻠﻪ "


آئی ٹی استاد کی ںئی ایپ ڈاونلوڈ کریں اور آئی ٹی استاد ٹیلی نار اور ذونگ نیٹ ورک پر فری استمال کریں

itustad

Discussion in 'History aur Waqiat' started by PRINCE SHAAN, Apr 20, 2014.

History aur Waqiat"/>Apr 20, 2014"/>

Share This Page

  1. PRINCE SHAAN
    Online

    PRINCE SHAAN Guest

    "ﺣﺎﻓﻆ ﻋﺎﺭﻑ ﺍﻟﻠﻪ "

    ﺍﯾﮏ ﻣﺮﺗﺒﮧ ﺍﯾﮏ ﻋﺎﻟﻢ ﺑﯿﻤﺎﺭ ﭘﮍ ﮔﺌﮯ ﺍﻭﺭ ﺑﻐﺮﺽ ﻋﻼﺝ
    ﺍﻥ ﮐﻮ ﮨﺴﭙﺘﺎﻝ ﻣﯿﮟ ﺩﺍﺧﻞ ﮐﯿﺎ ﮔﯿﺎ۔ ﮨﺴﭙﺘﺎﻝ ﻣﯿﮟ ﺍﻥ

    ﮐﯽ ﺩﯾﮑﮫ ﺑﮭﺎﻝ ﭘﺮ ﺟﺲ ﺧﺎﺗﻮﻥ ﮈﺍﮐﭩﺮ ﮐﻮ ﻣﺎﻣﻮﺭ ﮐﯿﺎ
    ﮔﯿﺎ ﻭﮦ ﺍﻥ ﮐﮯ ﻋﻠﻢ، ﺗﻘﻮﯼٰ ﺍﻭﺭ ﺣﺴﻦ ﺍﺧﻼﻕ ﮐﯽ ﺑﻨﺎ
    ﭘﺮ ﺍﻥ ﮐﯽ ﺑﮩﺖ ﺯﯾﺎﺩﮦ ﺗﮑﺮﯾﻢ ﮐﺮﺗﯽ ﺗﮭﯿﮟ ﺍﻭﺭ ﺍﻥ ﮐﯽ
    ﺧﺪﻣﺖ ﮐﻮ ﺍﭘﻨﮯ ﻟﯿﮯ ﺑﺎﻋﺚ ﺷﺮﻑ ﻭ ﺍﺧﺘﯿﺎﺭ ﺳﻤﺠﮭﺘﯽ
    ﺗﮭﯿﮟ۔ ﺣﻀﺮﺕ ﮐﮯ ﻣﺸﺎﮨﺪﮦ ﻣﯿﮟ ﯾﮧ ﺑﺎﺕ ﺁﺋﯽ ﮐﮧ ﺍﺱ
    ﺧﺎﺗﻮﻥ ﮈﺍﮐﭩﺮ ﻧﮯ ﺍﮐﺜﺮ ﻭ ﺑﯿﺸﺘﺮ ﻣﻐﺮﺑﯽ ﻟﺒﺎﺱ ﺯﯾﺐ ﺗﻦ
    ﮐﯿﺎ ﮨﻮﺗﺎ ﺗﮭﺎ ﺟﻮ ﺍﺳﻼﻣﯽ ﺗﻌﻠﯿﻤﺎﺕ ﮐﮯ ﻣﻄﺎﺑﻖ ﺳﺘﺮ
    ﭘﻮﺷﯽ ﮐﮯ ﺗﻘﺎﺿﻮﮞ ﭘﺮ ﭘﻮﺭﯼ ﻧﮩﯿﮟ ﺍﺗﺮﺗﺎ ﺗﮭﺎ۔
    ﺧﺼﻮﺻﺎً ﺷﺎﺭﭦ ﺳﮑﺮﭦ ﮐﯽ ﻭﺟﮧ ﺳﮯ ﭨﺎﻧﮕﯿﮟ ﺑﺮﮨﻨﮧ
    ﺭﮨﺘﯽ ﺗﮭﯿﮟ۔ ﺣﻀﺮﺕ ﭼﺎﮨﺘﮯ ﺗﮭﮯ ﮐﮧ ﺍﺱ ﺧﺎﺗﻮﻥ ﮐﻮ
    ﺍﺱ ﻟﺒﺎﺱ ﺳﮯ ﻣﻨﻊ ﮐﺮﯾﮟ ﻟﯿﮑﻦ ﮐﺴﯽ ﻣﻨﺎﺳﺐ ﻭﻗﺖ
    ﺍﻭﺭ ﻣﻨﺎﺳﺐ ﺍﻧﺪﺍﺯ ﻣﯿﮟ۔ ﺍﯾﮏ ﺩﻥ ﻭﮦ ﺧﺎﺗﻮﻥ ﺑﺎﺯﺍﺭ ﺟﺎ
    ﺭﮨﯽ ﺗﮭﯿﮟ، ﺍﻧﮩﻮﮞ ﻧﮯ ﺣﻀﺮﺕ ﺳﮯ ﭘﻮﭼﮭﺎ ﮐﮧ ﺁﭖ
    ﮐﻮﮐﺴﯽ ﭼﯿﺰ ﮐﯽ ﺿﺮﻭﺭﺕ ﮨﻮ ﺗﻮ ﺑﺘﻼﺋﯿﮯ ﺗﺎﮐﮧ ﻣﯿﮟ ﺁﭖ
    ﮐﮯ ﻟﯿﮯ ﻟﯿﺘﯽ ﺁﺅﮞ۔ ﺣﻀﺮﺕ ﻧﮯ ﻓﺮﻣﺎﯾﺎ: ﺑﯿﭩﺎ! ﺑﮑﺮﯼ ﮐﯽ
    ﺍﯾﮏ ﺳﺎﻟﻢ ﺭﺍﻥ ﻟﯿﺘﯽ ﺁﻧﺎ ﻟﯿﮑﻦ ﺍﯾﮏ ﺷﺮﻁ ﮨﮯ ﮐﮧ
    ﮐﺴﯽ ﺗﮭﯿﻠﯽ ﯾﺎ ﺷﺎﭘﻨﮓ ﺑﯿﮓ ﻣﯿﮟ ﮈﺍﻝ ﮐﺮ ﻧﮩﯿﮟ ﺑﻠﮑﮧ
    ﺳﺮﻋﺎﻡ ﮨﺎﺗﮫ ﻣﯿﮟ ﺗﮭﺎﻡ ﮐﺮ ۔ ﮈﺍﮐﭩﺮ ﺻﺎﺣﺒﮧ ﮐﮩﻨﮯ
    ﻟﮕﯿﮟ: ﺣﻀﺮﺕ! ﻣﯿﮟ ﺑﮑﺮﯼ ﮐﯽ ﺳﺎﻟﻢ ﺭﺍﻥ ﺗﻮ ﻟﮯ ﺁﺅﮞ
    ﮔﯽ ﻟﯿﮑﻦ ﺟﺲ ﻃﺮﺡ ﺁﭖ ﻓﺮﻣﺎ ﺭﮨﮯ ﮨﯿﮟ ﺍﺱ ﻃﺮﺡ ﺗﻮ
    ﻣﯿﺮﮮ ﻟﯿﮯ ﻣﻤﮑﻦ ﻧﮩﯿﮟ۔ ﺣﻀﺮﺕ ﻧﮯ ﭘﻮﭼﮭﺎ ﺑﯿﭩﺎ ﮐﯿﻮﮞ
    ﻣﻤﮑﻦ ﻧﮩﯿﮟ؟ ﮐﮩﻨﮯ ﻟﮕﯿﮟ ﺑﻐﯿﺮ ﮐﺴﯽ ﺗﮭﯿﻠﯽ ﮐﮯ
    ﺧﺎﻟﯽ ﺭﺍﻥ ﮐﻮ ﺗﮭﺎﻣﮯ ﺩﯾﮑﮫ ﮐﺮ ﻟﻮﮒ ﻣﯿﺮﺍ ﻣﺬﺍﻕ
    ﺍﮌﺍﺋﯿﮟ ﮔﮯ ﺍﻭﺭ ﯾﮧ ﻣﯿﺮﮮ ﻟﯿﮯ ﻧﺎﻗﺎﺑﻞ ﺑﺮﺩﺍﺷﺖ ﮨﮯ۔
    ﺣﻀﺮﺕ ﻧﮯ ﻣﻮﻗﻊ ﻏﻨﯿﻤﺖ ﺟﺎﻧﺎ ﺍﻭﺭ ﻓﺮﻣﺎﻧﮯ ﻟﮕﮯ: ﺑﯿﭩﺎ
    ﻣﺴﻠﻤﺎﻥ ﺧﺎﺗﻮﻥ ﮐﯽ ﺭﺍﻥ ﺑﮑﺮﯼ ﮐﯽ ﺭﺍﻥ ﺳﮯ ﮐﮩﯿﮟ
    ﺯﯾﺎﺩﮦ ﭼﮭﭙﺎﺋﮯ ﺟﺎﻧﮯ ﮐﮯ ﻻﺋﻖ ﮨﮯ۔ ﺍﺗﻨﮯ ﺷﻔﯿﻖ ﺍﻭﺭ ﭘﺮ
    ﺍﺛﺮ ﺍﻧﺪﺍﺯ ﻣﯿﮟ ﮐﯽ ﮔﺌﯽ ﻧﺼﯿﺤﺖ ﺳﻦ ﮐﺮ ﮈﺍﮐﭩﺮ
    ﺻﺎﺣﺒﮧ ﮐﯽ ﺁﻧﮑﮭﯿﮟ ﻧﻢ ﮨﻮ ﮔﺌﯿﮟ۔ ﺍﻧﮩﻮﮞ ﻧﮯ ﺍﻥ ﻋﺎﻟﻢ
    ﺻﺎﺣﺐ ﮐﻮ ﮔﻮﺍﮦ ﺑﻨﺎ ﮐﺮ ﺍﻟﻠﮧ ﺗﻌﺎﻟﯽٰ ﺳﮯ ﺗﻮﺑﮧ ﮐﯽ ﺍﻭﺭ
    ﻣﺴﺘﻘﺒﻞ ﻣﯿﮟ ﮐﺒﮭﯽ ﺑﮭﯽ ﻏﯿﺮ ﺷﺮﻋﯽ ﺍﻭﺭ ﻣﻐﺮﺑﯽ
    ﻟﺒﺎﺱ ﻧﮧ ﭘﮩﻨﻨﮯ ﮐﺎ ﻋﮩﺪ ﮐﯿﺎ۔ ﺳﭻ ﮨﮯ ﮐﮧ ﻧﺼﯿﺤﺖ ﺍﮔﺮ
    ﻣﻨﺎﺳﺐ ﻭﻗﺖ ﭘﺮ ﻣﻨﺎﺳﺐ ﺍﻧﺪﺍﺯ ﻣﯿﮟ ﮐﯽ ﺟﺎﺋﮯ ﺗﻮ
    ﺿﺮﻭﺭ ﺍﺛﺮ ﺩﮐﮭﺎﺗﯽ ﮨﮯ"

     
  2. Net KiNG
    Offline

    Net KiNG VIP Member
    • 38/49

    ٹیکسٹ ٹھیک طرح شو نہیں ہو رہی۔۔۔۔
     
  3. UmerAmer
    Offline

    UmerAmer Regular Member
    • 38/49

    Zabrdast Sharing
     
  4. Rahi
    Offline

    Rahi Regular Member
    • 36/49

    بسم اللہ الرحمٰن الرحیم
    بہت عمدہ شئیرنگ ہے، شکریہ
     
  5. ~Asad~
    Offline

    ~Asad~ Regular Member
    • 36/49

    جزاک اللہ بہت اچھے
     

Share This Page