1. السلام علیکم
    آئی ٹی استاد ڈاٹ کام وزٹ کرنے کا شکریہ۔ ہم آپکو خوش آمدید کہتے ہیں۔ فورم کے کسی بھی حصے کو استعمال میں لانے جیسے پوسٹنگ کرنے، کوئی تھریڈ دیکھنے یا لکھنے کسی بھی ممبر سے رابطہ کرنے کے لئے اور فورم کے دیگر آلات وغیرہ کا استعمال کرنے کے لئے آپکا رجسٹر ہونا ضروری ہے۔ رجسٹر ہونے کے لئے یہاں کلک کریں۔ رجسٹریشن حاصل کرنا بالکل آسان اور بالکل مفت ہے۔

ضمیر

Discussion in 'Urdu Iqtebaas' started by sweet love, May 7, 2014.

Share This Page

  1. sweet love
    Offline

    sweet love Well Wishir
    • 16/16

    دنیا کے بازار میں شیراز نے اپنا ضمیر بیچا تھا ۔۔۔۔اس نے اپنا سب سے مہنگا اساسہ سب سے سستا سمجھ کر دیا تھا ۔۔۔اسے ضمیر کے بدلے لاکھوں ملے ۔۔۔۔یہ دام شیراز کو اچھا سودا لگا ۔
    دنیا کے بازار میں زینی نے اپنی حیا رکھ دی تھی ۔۔۔اس نے اپنے سب سے قیمتی اساسے کو ۔۔۔قیمتی سمجھ کر ہی دیا تھا اسے حیا کے بدلے قارون ملے ۔۔۔۔جو بھی دام ملے وہ زینی کو ہمیشہ گھاٹے کا سوداہی لگا۔
    آنسو اب کیا جاتے ۔۔۔پچھتاوا اب کیا جاتا اس رات اسے وہ ساری نصیحتیں یاد آتی رہیںجو سب اسے کرتے رہے تھے ۔اور جنہیں سننے پر وہ تیار نہیں تھی ۔
    وہ حرام رزق کو من وسلوہ سمجھ کر کھا رہا ہے اسے جانے دو زینی اس کے مقدر میں حرام کھانا ہے ۔،،من و سلوہ ،،نہیں ہے اس کی قسمت میں ۔اس کے باپ نے اس سے کہا تھا ۔۔۔اس کے باپ کو کیا پتا تھا کہ ،،من و سلوہ،، تو زینی کے مقدر میں بھی نہیں تھا ۔شیراز اپنی وجوہات کی وجہ سے پیسے کے پیچھے گیا تھا ۔۔۔۔وہ اپنی وجوہات کی وجہ سے ۔
    جو چیز اللہ نہ دے زینی اسے انسانوں سے نہیں مانگنا چاہئیے ۔ورنہ انسان بڑا خوار ہوتا ہے ۔،،ماں باپ کی باتیں اتنی دیر سے سمجھ میں کیوں آتی ہیں ۔
    عمیرہ احمد کے ناول : من و سلوہ سے اقتباس
     
  2. PakArt
    Offline

    PakArt May Allah bless all Martyre of Pakistan
    • 83/98

    یہ پوسٹ کسی اور فورم پر پڑہی ہے لیکن یاد نہی-بحرحال اچھا اشتراک ہے
    [​IMG]
     
  3. PRINCE SHAAN
    Offline

    PRINCE SHAAN Guest

    Very Nice Sharing...Thanks
     

Share This Page