1. السلام علیکم
    آئی ٹی استاد ڈاٹ کام وزٹ کرنے کا شکریہ۔ ہم آپکو خوش آمدید کہتے ہیں۔ فورم کے کسی بھی حصے کو استعمال میں لانے جیسے پوسٹنگ کرنے، کوئی تھریڈ دیکھنے یا لکھنے کسی بھی ممبر سے رابطہ کرنے کے لئے اور فورم کے دیگر آلات وغیرہ کا استعمال کرنے کے لئے آپکا رجسٹر ہونا ضروری ہے۔ رجسٹر ہونے کے لئے یہاں کلک کریں۔ رجسٹریشن حاصل کرنا بالکل آسان اور بالکل مفت ہے۔
  2. آئی ٹی استاد کے لیے ٹیم ممبرز کی ضرورت ہے خواہش مند ممبرز ایڈمن سے رابطہ کریں
    Dismiss Notice

Itna hi kehna hay tum say, mumkin ho to aa jaana

Discussion in 'Roman Urdu Poetry' started by Jal Pari, May 20, 2014.

Share This Page

  1. Jal Pari
    Offline

    Jal Pari Guest

    baat chali teri aankhon say ja pohnchi paimanay tuk
    kheinch rahi hai teri ulfat, aaj mujhey maikhanay tuk

    ishq ki batain ghum ki batain, dunya walay kertay hain
    kis nay shama ka dukh dekha, kaun gaya parwanay tuk

    ishq nahin hay tum ko mujh say, sirf bahanay kerti ho
    yun hi bahanay qayam rakhna, tum meray mer jaanay tuk

    itna hi kehna hay tum say, mumkin ho to aa jaana,
    aa hi gayai tou rukna ho ga, aankhon k pathranay tuk
     
  2. Net KiNG
    Offline

    Net KiNG VIP Member
    • 38/49

    بہت عمدہ شئیرنگ ہے۔۔
    کیپ اٹ اپ​
     
  3. UmerAmer
    Offline

    UmerAmer Moderator
    • 38/49

    Very Nice
    Keep it up
     
  4. نمرہ
    Offline

    نمرہ Management
    • 38/49

  5. ~Asad~
    Offline

    ~Asad~ Management
    • 36/49

    بہت عمدہ اپ کا بہت بہت شکریہ
     

Share This Page