1. السلام علیکم
    آئی ٹی استاد ڈاٹ کام وزٹ کرنے کا شکریہ۔ ہم آپکو خوش آمدید کہتے ہیں۔ فورم کے کسی بھی حصے کو استعمال میں لانے جیسے پوسٹنگ کرنے، کوئی تھریڈ دیکھنے یا لکھنے کسی بھی ممبر سے رابطہ کرنے کے لئے اور فورم کے دیگر آلات وغیرہ کا استعمال کرنے کے لئے آپکا رجسٹر ہونا ضروری ہے۔ رجسٹر ہونے کے لئے یہاں کلک کریں۔ رجسٹریشن حاصل کرنا بالکل آسان اور بالکل مفت ہے۔

Qisa-e-hijar agar tujh ko sunany

Discussion in 'Roman Urdu Poetry' started by Mohammad Sajjad, May 21, 2014.

  1. Mohammad Sajjad

    Mohammad Sajjad Senior Member

    Qisa-e-hijar agar tujh ko sunany lag jaiyen
    Jaan-e-jaan umar nahien is mein zamany lag jaiyen
    Main ny is khouf sy gham tujh sy chupaye apny
    Mery Aansu teri Aankhon sy na Aany lag jaiyen
    Kaash aisa ho kabhi main kuch na kahoon tujh sy
    Meri Aankhein mery ehwaal batany lag jaiyen
    Rat-jagy khilny lagy phir sy meri neendon mein
    Rog mujh ko na kahien phir sy purany lag jaiyen
    Aisy Aalam mein tujhy bhoolna mumkin hai k jab
    Saary mousam hi teri yaad dilany lag jaiyen
    Ay dil-e-ishaq zada tujh sy shikayet kesi
    Jab mery khawab hi khud mujh ko jalany lag jaiyen
    Haan mujhy naaz hai Aashufta sari py apni
    Raah dekhoon ga bhaly tujh ko zamany lag jaiyen.
     
  2. Net KiNG

    Net KiNG VIP Member

    بہت ہی عمدہ تھریڈ بنایا ہے۔۔
    ہمارے ساتھ شئیر کرنے کا شکریہ
     
  3. UmerAmer

    UmerAmer VIP Member

    Very Nice
    Keep it up
     
  4. نمرہ

    نمرہ Supper Moderator

    nice sharing
     
  5. ~Asad~

    ~Asad~ Moderator

    بہت عمدہ اپ کا بہت بہت شکریہ
     

Share This Page