1. السلام علیکم
    آئی ٹی استاد ڈاٹ کام وزٹ کرنے کا شکریہ۔ ہم آپکو خوش آمدید کہتے ہیں۔ فورم کے کسی بھی حصے کو استعمال میں لانے جیسے پوسٹنگ کرنے، کوئی تھریڈ دیکھنے یا لکھنے کسی بھی ممبر سے رابطہ کرنے کے لئے اور فورم کے دیگر آلات وغیرہ کا استعمال کرنے کے لئے آپکا رجسٹر ہونا ضروری ہے۔ رجسٹر ہونے کے لئے یہاں کلک کریں۔ رجسٹریشن حاصل کرنا بالکل آسان اور بالکل مفت ہے۔
  2. آئی ٹی استاد کے لیے ٹیم ممبرز کی ضرورت ہے خواہش مند ممبرز ایڈمن سے رابطہ کریں
    Dismiss Notice
  3. Dismiss Notice

میری فریاد سن کچھ تو محسوس کر۔۔۔میرے ہونے &#16


آئی ٹی استاد کی ںئی ایپ ڈاونلوڈ کریں اور آئی ٹی استاد ٹیلی نار اور ذونگ نیٹ ورک پر فری استمال کریں

itustad

Discussion in 'Proud To Be Pakistani' started by Net KiNG, May 25, 2014.

Proud To Be Pakistani"/>May 25, 2014"/>

Share This Page

  1. Net KiNG
    Offline

    Net KiNG VIP Member
    • 38/49

    اے میرے نوجواں تو میری بات سن
    کچھ تو محسوس کر
    تیرے چاروں ہے جو پھیلا ہوا
    اس کو محسوس کر
    سب مجھے نوچ کر کھا رہے ہیں یہاں
    بات اب کی نہیں بات صدیوں کی ہے
    ان کو معلوم ہے، جانتے ہیں وہ سب
    کتنی لاشیں گریں، کتنے بازوں کٹے
    کتنی ماؤں کے بیٹے جدا ہو گئے
    کتنی بہنوں کے آنچل جلائے گئے
    کتنے بچے یتیمی کو اوڑھے ہوئے میری جانب بڑھے
    میں اک خواب تھا
    ایسے گھر کا جہاں ہر کوئی رہ سکے ایک پرچم تلے
    نہ کوئی خوف ہو اور نہ ڈر کوئی
    غیر کے سامنے نہ جھکے سر کوئی
    میں اک خواب تھا جس کو قائد نے تعبیر تو کر دیا
    میرے بچے مگر اس کی تعبیر کے حرف و معانی سمجھنے سے قاصر رہے
    خون اپنوں کا خود ہی بہاتے رہے
    اپنے لاشوں کو خود ہی اٹھاتے رہے
    لا الہ زباں سے تو کہتے رہے
    اس کے معانی سے آنکھیں چراتے رہے
    متحد نہ ہوئے منتشر ہو گئے
    اور ایمان کو بیچ کر سو گئے
    نظم و تنظیم کی خوبیاں بھول کر
    میرے بچوں کی قربانیاں بھول کر
    اپنی دنیا میں گم اس طرح ہو گئے
    جوش جذبے سبھی ولولے کھو گئے
    بات اب کی نہیں بات صدیوں کی ہے
    جانتا ہوں کہ سب لوگ ایسے نہیں
    میری آغوش میں ایسے بچے بھی ہیں
    میری چاہت سے دل جن کے لبریز ہیں
    جن کی آنکھوں میں خوابوں کی تعبیر ہے
    جو سمجھتے ہیں قائد کے فرمان کو
    جانتے ہیں جو اقبال نے کہہ دیا
    ان کے دم سے ہی زندہ ہوں میں آج تک
    یہ میرا نام ہیں میری پہچان ہیں
    اے میرے نوجواں تو میری بات سن
    کل جو گزرا ہے تو بھی اسے دیکھے
    کس میں تیری بقاء ہے اسے جان لے
    آنے والا جو کل ہے تیرے دم سے ہے
    ایسا بچہ نہ بن جو مجھے نوچ کر پیٹ بھرتا رہے
    کام کی عظمتوں کو سمجھ نوجواں
    میری مٹی میں سونا ہے تیرے لئے
    اپنے قائد کے خوابوں کو تعبیر کر
    اپنے اندر کے دشمن کو خود مار دے
    میرے ہونے نہ ہونے کو محسوس کر
    آنے والا جو کل ہے تیرے دم سے ہے
    اے میرے نوجواں سن میری بات سن
    میری فریاد سن کچھ تو محسوس کر
    میرے ہونے نہ ہونے کو محسوس کر
    اے میرے نوجواں تو میری بات سن
     
  2. UmerAmer
    Offline

    UmerAmer Regular Member
    • 38/49

    Nice
    Sharing
     
  3. PRINCE SHAAN
    Online

    PRINCE SHAAN Guest

    Very nice sharing............
     
  4. PakArt
    Online

    PakArt ITUstad dmin Staff Member
    • 83/98

  5. Rahi
    Offline

    Rahi Regular Member
    • 36/49

    بسم اللہ الرحمٰن الرحیم
    بہت عمدہ، اس سلسلے کو جاری رکھیں، شکریہ
     
  6. نمرہ
    Offline

    نمرہ Regular Member
    • 38/49

    very nice sharing
     

Share This Page